• عبادات >> صلاة (نماز)

    سوال نمبر: 602153

    عنوان:

    كیا فرض نماز دوبارہ پڑھنا درست ہے؟

    سوال:

    محترم مفتی صاحبان تہجد کے لئے اٹھ جاتا ہوں جب آذان ہوجائے توسردی کی وجہ سے لیٹ کر نماز کا انتظار کرتا ہوں، نماز اور آذان کے وقت ایک گھنٹہ کا وقفہ ہے ، باجماعت نماز نہیں چھوڑتا لیکن ایسی ڈر کی وجہ کہی سو نہ جاؤں اور نماز قضاء نہ ہوجائے اذان کے بعد نماز کرکے دوبارہ امام کے ساتھ نماز کرسکتا ہوں، پہلی نماز اس لیے اگر سوجاؤں تو نماز قضاء نہ ہوجائے دو دفعہ نماز پڑھنے کی اجازت ہوسکتی ہیں، رہنمائی کرکے مشکور فرمائیں شکریہ۔ اللہ تعالیٰ جزائے خیر دے ۔

    جواب نمبر: 602153

    بسم الله الرحمن الرحيم

    Fatwa : 463-399/B=06/1442

     شریعت کا اصول ہے الَأمْرُ لاَ یَتَکَرَّرُ اللہ کی طرف سے ایک وقت میں ایک ہی مرتبہ فرض ادا کرنے کا حکم ہے یعنی ظہر کے وقت میں ایک ہی مرتبہ ظہر کی نماز فرض ہے، دوبارہ اسے ادا نہیں کرسکتا۔ اگر آپ اذان کے بعد فجر کی فرض نماز بھی پڑھ لیتے ہیں اور پھر دوبارہ امام کے ساتھ پڑھنا چاہیں تو احناف کے یہاں نہیں پڑھ سکتے کیونکہ فرض ایک ہی مرتبہ ادا کیا جاتا ہے ایک ہی فرض کو دو مرتبہ ادا کرنے کا حکم نہیں۔ آپ وہ وقت ذکر کرنے میں یا تلاوت کرنے میں صرف کریں، سوئیں نہیں۔

    ---------------------------------

    جواب صحیح ہے؛ البتہ مزید یہ عرض ہے کہ فجر میں فرض پڑھنے کے بعد نفل کی نیت سے بھی امام کے ساتھ فرض میں شریک ہونا درست نہیں ہے۔ (ن)


    واللہ تعالیٰ اعلم


    دارالافتاء،
    دارالعلوم دیوبند