• عبادات >> صلاة (نماز)

    سوال نمبر: 602050

    عنوان:

    کھانسی آنے کی صورت میں اذان کیسے دے؟

    سوال:

    اگر مؤذن کو درمیان اذان کھانسی ہونے لگے اور وہ اذان کے کلمات آگے نہیں کہہ سکتا تو اب دوسرا آدمی اذان کہے تو کہاں سے شروع کر؟ پہلے سے کہے یہ جہاں سے باقی ہے وہاں سے ؟

    جواب نمبر: 602050

    بسم الله الرحمن الرحيم

    Fatwa:368-278/N=5/1442

     صورت مسئولہ میں جب آدھ، پون منٹ میں کھانسی رک جائے تو خود موٴذن مابقیہ کلمات کہہ کر اذان مکمل کرے گا۔ اور اگر موٴذن کی کھانسی رکنے کا نام نہ لے اور دوسرے آدمی کے اذان کہنے کی ضرورت ہوجائے تو ایسی صورت دوسرا موٴذن از سر نو دوبارہ اذان کہے گا، مابقیہ کلمات ِ اذان کہنا سنت اذان کی ادائیگی کے لیے کافی نہ ہوگا۔

    أقول: یظھر لي أن المراد بالوجوب اللزوم في تحصیل سنة الأذان وأن المراد أنہ إذا عرض للموٴذن ما یمنعہ عن الإتمام وأراد آخر أن یوٴذن یلزمہ استقبال الأذان من أولہ إن أراد إقامة السنة؛ فلو بنی علی ما مضی من أذان الأول لم یصح، فلذا قال في الخانیة: لو عجز عن الإتمام استقبل غیرہ اھ؛ لئلا یکون آتیا ببعض الأذان (رد المحتار، کتاب الصلاة، باب الأذان، ۲: ۶۱، ط: مکتبة زکریا دیوبند، ۲: ۶۰۸، ت: الفرفور، ط: دمشق)۔


    واللہ تعالیٰ اعلم


    دارالافتاء،
    دارالعلوم دیوبند