• عبادات >> صلاة (نماز)

    سوال نمبر: 601675

    عنوان:

    ٹوپی نہ پہننے كی وجہ سے مسجد میں آنے سے روكنا؟

    سوال:

    جناب مفتی صاحب شریعت اسلامی کر رو ان سوالات کا جواب دیں۔

    ۱۔ کیا امام مسجد کسی کو ٹوپی نہ پہننے کی وجہ سے مسجد آنے سے اور اپنے پیچھے نماز پڑھنے سے روک سکتا ہے؟

    ۲۔ کیا امام وقف شدہ مسجد سے کسی ایسے مسلمان آدمی کواپنے محلے کی مسجد آنے سے منع کرسکتا ہے۔جو مسجد کے امور، نماز کے اوقات میں کام نہیں رکھتا ہو۔ نہ شور شرابہ کرتا ہو۔ بلکہ نماز پڑھ کر چلا جا تا ہو؟

    ۳۔کیا امام وقف شدہ مسجد میں کسی ایسے مسلمان آدمی کو جو نماز کے امور میں کام نہیں رکھتا ہو۔اور کسی قسم کا شور شرابہ نہیں کرتا ہو۔ اپنے پیچھے نماز پڑھنے سے روک سکتاہے؟ اوروہ مقتدی نماز باجماعت ادا کرنا چاہتا ہو۔ کیونکہ نماز باجماعت کا اجر بھی زیاہ ہے بلکہ ضروری ہے۔ ایسی صورت میں مقتدی نماز با جماعت چھوڑے گا یا امام امامتی چھوڑے گا؟

    جواب نمبر: 601675

    بسم الله الرحمن الرحيم

    Fatwa:320-231/N=5/1442

     (۱): محض ٹوپی نہ پہننا وجہ ہے یا کچھ اور بھی؟

    (۲،۳): کوئی بھی امام، کسی بھی مقتدی کو مسجد آنے اور اپنے پیچھے نماز پڑھنے سے بلا وجہ شرعی نہیں روک سکتا، اور اگر وہ بلا وجہ شرعی روکتا ہے تو غلط کرتا ہے، امام کو ایسا نہیں کرنا چاہیے۔ اور اگر امام صاحب اس کی کوئی وجہ بیان کرتے ہیں تو اسے لکھ کر سوال کرنا چاہیے۔


    واللہ تعالیٰ اعلم


    دارالافتاء،
    دارالعلوم دیوبند