• عبادات >> صلاة (نماز)

    سوال نمبر: 601047

    عنوان:

    امام کے ساتھ پوری نماز پڑھنے کے باوجود مقتدی بھولے سے ایک رکعت زائد پڑھ لے اور سجدہٴ سہو کرلے تو کیا نماز درست ہوگئی؟

    سوال:

    امام کے ساتھ عشاء کی 4 رکعتیں پڑھیں اور جب امام نے سلام پھیرا تو مقتدی بھولے سے کھڑا ہو گیا اور 5 رکعت بھی پڑھ لی اور 5 رکعت کے دوران یاد آیا کہ میں تو 4 رکعت پڑھ چکا تھا اب آیا اس کی نماز سجدہ سہو کرنے سے ہو جائے گی؟اس بارے میں رہنمائی فرمائیں یاد رہے کہ مقتدی نے 5 رکعت پڑھ کے سجدہ سہو کیا اور سلام پھیر دیا۔ جزاک اللہ خیر

    جواب نمبر: 601047

    بسم الله الرحمن الرحيم

    Fatwa:167-115/N=4/1442

     جی ہاں! صورت مسئولہ میں جب مقتدی نے سجدہ سہو کے ساتھ نماز مکمل کرلی تو اُس کی نماز ہوگئی۔

    مستفاد: وسجد للسھو …لنقصان فرضہ بتأخیر السلام (الدر المختارمع رد المحتار، کتاب الصلاة، باب سجود السھو، ط: مکتبة زکریا دیوبند، ۴: ۵۰۳، ۵۰۴، ت: الفرفور، ط: دمشق)۔


    واللہ تعالیٰ اعلم


    دارالافتاء،
    دارالعلوم دیوبند