• عبادات >> صلاة (نماز)

    سوال نمبر: 59859

    عنوان: کیا شریعت اسکی اجازت دیتی ہے کہ چند لوگوں کی نفلی عبادت کی وجہ سے جماعت کے وقت کو صرف ایک دن کے لیے تبدیل کیا جائے جبکہ مستقل نمازیوں کی جماعت چھوٹ نے کا قوی امکان ہے - دیکھا یہ جاتا ہے کہ شعبان کی پندرویں شب کو نوافل کی وجہ سے پندرہویں صبح فجر کی نماز طلوع صبح صادق سے دس منٹ بعد ادا کر لی جاتی ہے رہنمای فرمائیں۔

    سوال: کیا شریعت اسکی اجازت دیتی ہے کہ چند لوگوں کی نفلی عبادت کی وجہ سے جماعت کے وقت کو صرف ایک دن کے لیے تبدیل کیا جائے جبکہ مستقل نمازیوں کی جماعت چھوٹ نے کا قوی امکان ہے - دیکھا یہ جاتا ہے کہ شعبان کی پندرویں شب کو نوافل کی وجہ سے پندرہویں صبح فجر کی نماز طلوع صبح صادق سے دس منٹ بعد ادا کر لی جاتی ہے رہنمای فرمائیں۔

    جواب نمبر: 59859

    بسم الله الرحمن الرحيم

    Fatwa ID: 1226-1226/M=2/1437-U مسئولہ صورت میں چند نفلی عبادت کرنے والے لوگوں کی خاطر صرف ایک دن کے لیے فجر کی نماز کو اپنے وقت مقررہ سے پہلے پڑھنا جس کی وجہ سے اکثر نمازیوں کی جماعت فوت ہونے کا قوی اندیشہ ہو، یہ ٹھیک نہیں ہے، اکثریت کی رعایت ملحوظ رہنا چاہیے۔


    واللہ تعالیٰ اعلم


    دارالافتاء،
    دارالعلوم دیوبند