• عبادات >> صلاة (نماز)

    سوال نمبر: 59485

    عنوان: طلوع آفتاب كے بعد پڑھی گئی نمازوں كی قضا

    سوال: کیا نماز عصر 7:00 بجے پڑھی جاسکتی ہے جبکہ مذکورہ دن کا غروب آفتاب کا وقت 07:07 بجے کا ہو ۔ ماضی میں اس طرح سے پڑھی گئی نماز عصر کو بطور قضا دوبارہ پڑھوں یا اب اعادہ کرنے کی ضرورت نہیں ہے ؟ اسی طرح کیا نماز فجر 07:11 بجے پڑھ سکتاہوں؟ جبکہ مذکورہ دن کا طلوع آفتاب کا وقت 07:07 بجے کا ہو۔ ماضی میں اس طرح سے پڑھی گئی نماز فجر کو بطور قضا دوبارہ پڑھوں یا اب اعادہ کرنے کی ضرورت نہیں ہے ؟

    جواب نمبر: 59485

    بسم الله الرحمن الرحيم

    Fatwa ID: 405-405/Sd=8/1436-U (۱) عصر کی نماز ایسے وقت میں پڑھنا کہ سورج میں تغیر آجائے، مکروہ ہے، اگرچہ مکروہ وقت میں نماز پڑھنے سے نماز ہوجاتی ہے، لوٹانے کی ضرورت نہیں ہوتی، لہٰذا جب کہ غروب آفتاب کا وقت 7:7 پر ہو، تو 7 بجے عصر کی نماز پڑھنا مکروہ ہے، تاہم اس وقت میں پڑھی گئی ساری نمازیں صحیح ہوگئیں، اب اعادہ کی ضرورت نہیں ہے۔ (۲) طلوع آفتاب کے بعد فجر کی نماز ادا کرنا صحیح نہیں ہے، لہٰذا جو نمازیں سات بج کر گیارہ منٹ پر پڑھی گئیں، جب کہ طلوع آفتاب کا وقت سات بج کر سات منٹ پر ہو، تو ان نمازوں کی قضا ضروری ہے، وہ نمازیں ادا نہیں ہوئیں۔ لکن یکرہ تاخیرہ إلی أن تتغیر الشمس،ہکذا ذکر في الأصول، وفي القدوري: وذکر الطحطاوي إلی أن مع ہذا لو صلی جاز؛ لأنہ صلی في الوقت․ (الفتاوی التاتارخانیة: ۲/۱۰، زکریا) وقال اللہ تعالی: إِنَّ الصَّلَاةَ کَانَتْ عَلَی الْمُؤْمِنِینَ کِتَابًا مَوْقُوتًا․


    واللہ تعالیٰ اعلم


    دارالافتاء،
    دارالعلوم دیوبند