• عبادات >> صلاة (نماز)

    سوال نمبر: 58646

    عنوان: غیر آباد زمین پر مسجد ھو تو گھر میں نماز اور مسجد میں نمازکا فرق بیان کریں

    سوال: (۱) غیر آباد زمین پر مسجد ھو تو گھر میں نماز اور مسجد میں نمازکا فرق بیان کریں۔ اور (۲) اگر مسجد بدانی ھو تو اس کے بارے مین بتائیں..لیکن مسجد پھلے کی ھی بنی ھوی ہے ۔

    جواب نمبر: 58646

    بسم الله الرحمن الرحيم

    Fatwa ID: 418-383/Sn=7/1436-U (۱) باجماعت نماز ادا کرنا سنت موٴکدہ قریب بہ واجب ہے؛ لہٰذا مسجد (خواہ آبادی میں ہو یا غیر آباد جگہ میں) کا راستہ اگر مامون ہے نیز جائے قیام سے اتنی دور بھی نہیں جہاں تک آنے جانے میں حرج لازم آئے تو مسجد جاکر باجماعت نماز ادا کرنا ضروری ہے، اگر راستہ مامون نہیں ہے یا مسجد بہت دور ہے تو آپ کے لیے مسجد میں حاضر ہوکر شریک جماعت ہونا ضروری نہیں ہے۔ والجماعة سنة موٴکدة للرجال․․․ من غیر حرج (درمختار) قال الشامي: قید لکونہ سنة موٴکدة أو واجبة، فبالحرج یرتفع ویرخص في ترکہا ولکنہ یفوتہ الأفضل (درمختار مع الشامي: ۲/ ۲۸۷- ۲۹۱، باب الإمامة، ط: زکریا) (۲) اگر اس مسجد میں باجماعت نماز نہیں ہوتی تو قرب وجوار کے مسلمانوں پر ضروری ہے کہ مسجد کو آباد کریں اور اس میں باجماعت نماز شروع کریں۔ نوٹ: منشأ سوال کچھ اور ہو تو وضاحت کرکے دوبارہ سوال کریں۔


    واللہ تعالیٰ اعلم


    دارالافتاء،
    دارالعلوم دیوبند