• عبادات >> صلاة (نماز)

    سوال نمبر: 58618

    عنوان: لائف انشورنس كو جائز كهنے والے شخص كی امامت

    سوال: میرا سوال یہ ہے کہ میری مسجد کے امام مفسر قرآن ہیں، کسی نے ان سے مسئلہ معلوم کیا کہ لائف انشورنس جائز ہے تو انہوں نے کہا کہ جائز ہے ، دلیل دی کہ ہندوستان کے مسلمان کی جان کو خطرہ ہے۔ میرا سوال یہ ہے کہ انہوں نے صحیح بتایا غلط ؟ اگر غلط تو کیا ان کے پیچھے نماز ہوجائے گی؟

    جواب نمبر: 58618

    بسم الله الرحمن الرحيم

    Fatwa ID: 276-276/Sd=6/1436-U راجح قول کے مطابق ہندوستان میں بھی لائف انشورنس کرانا سود وقمار کی وجہ سے ناجائز ہے، جن حضرات نے ہندوستان کے حالات کے پیش نظر لائف انشورنس کی اجازت دی ہے، ان کا قول دلائل کے اعتبار سے کمزور ہے، تاہم جواز کی بات کہنے سے مذکورہ امام کی امامت مکروہ نہیں ہوگی۔ ============== نوٹ: لائف انشورنس سے متعلق دارالعلوم دیوبندکا مفصل ومدلل فتوی چند ا ہم عصری مسائل نامی کتاب میں چھپ چکا ہے، یہ کتاب دارالعلوم کی ویب سائٹ پر بھی موجود ہے، ملاحظہ فرمالیں۔ (مصعب)


    واللہ تعالیٰ اعلم


    دارالافتاء،
    دارالعلوم دیوبند