• عبادات >> صلاة (نماز)

    سوال نمبر: 57578

    عنوان: ظہر ، عصر اور عشاء کی چار رکعت سنت کیسے پڑھیں؟ چاروں رکعت ایک ہی سلام سے پڑھیں یا دو دورکعت کرکے دو سلام سے پڑھیں؟سنت نماز پڑھنے کا سب سے افضل طریقہ کیا ہے؟براہ کرم، حوالے کے ساتھ جواب دیں۔

    سوال: ظہر ، عصر اور عشاء کی چار رکعت سنت کیسے پڑھیں؟ چاروں رکعت ایک ہی سلام سے پڑھیں یا دو دورکعت کرکے دو سلام سے پڑھیں؟سنت نماز پڑھنے کا سب سے افضل طریقہ کیا ہے؟براہ کرم، حوالے کے ساتھ جواب دیں۔

    جواب نمبر: 57578

    بسم الله الرحمن الرحيم

    Fatwa ID: 228-193/Sn=4/1436-U (۱) ظہر سے پہلے چار رکعت سنت موٴکدہ ہے، ان چار رکعتوں کو ایک سلام کے ساتھ پڑھنا مسنون ہے، عصر اور عشاء سے پہلے چار رکعت سنت غیر موٴکدہ ہیں، یہ چار رکعتیں بھی ایک سلام کے ساتھ پڑھی جائیں گی وسُنَّ موٴکدا أربع قبل الظّہر․․․ بتسلیمة فلو بتسلیمتین لم تنسب عن السنة (درمختار) وفي رد المحتار تحت قولہ ”بتسلیمة‘ لما․․․ عن أیوب ۔کان یصلي النبي- صلی اللہ علیہ وسلم- بعد الزوال أربع رکعات، فقلت: ما ہذہ الصلاة التي تداوم علیہا، فقال: ہذہ ساعة تفتح أبواب السماء فیہا فأحب أن یصعد بي فیہا عمل صالح فقلت: أفي کلہن قراء ة؟ قال نعم، فقلت: بتسلیمة واحدة أو بتسلیمتین؟ فقال بتسلیمة واحدة رواہ الطحاوی وأبو داود وابن ماجہ الخ (در مختار مع الشامي: ص: ۴۵۱، ج ۲، ط: زکریا) وفیہ بعد صحفة: ویستحب أربع قبل العصر وقبل العشاء وبعدہا بتسلیمة الخ (حوالہ سابق ص: ۴۵۲) (۲) سنت پڑھنے کا بھی وہی طریقہ ہے جو فرض پڑھنے کا، صرف اتنا فرق ہے کہ چار رکعت والی سنتوں میں اخیر کی دو رکعتوں میں سورہٴ فاتحہ کے ساتھ سورہ ملانا بھی واجب ہے۔ نعم اعتبروا کون کل شفع صلاة علی حدة في حق القراء ة احتیاطًا إلی آخر ما في ہذہ الصفحة وما یلیہا (الدر مع الرد: ۲/۴۶۵، ۲۴۵۷، ط: زکریا)


    واللہ تعالیٰ اعلم


    دارالافتاء،
    دارالعلوم دیوبند