• عبادات >> صلاة (نماز)

    سوال نمبر: 56907

    عنوان: اگر کوئی لڑکا یا لڑکی بیس سال میں نماز شروع کرتاہے تو اسے کتنے سال کی قضا پڑھنی ہوگی؟

    سوال: اگر کوئی لڑکا یا لڑکی بیس سال میں نماز شروع کرتاہے تو اسے کتنے سال کی قضا پڑھنی ہوگی؟

    جواب نمبر: 56907

    بسم الله الرحمن الرحيم

    Fatwa ID: 122-119/N=2/1436-U بلوغ کے بعد سے بیس سال کی عمر تک جتنی نمازیں چھوٹی ہوں سبھی کی قضا کرنی ہوگی، اور اگر ان کی صحیح تعداد یاد نہ ہو تو ظن غالب پر عمل کرے، اوراگر کسی تعداد کا غالب گمان نہ ہو تو اس وقت تک قضا نمازیں ادا کرتا رہے یا کرتی رہے،جب تک یہ یقین نہ وجائے کہ اب ذمہ میں کوئی نماز باقی نہیں رہ گئی۔ ”من لم یدر کمیة الفوائت یعمل بأکبر رأیہ فإن لم یکن لہ رأي یقضي حتی یتیقن أنہ لم یبق علیہ شیء“ (حاشیة الطحطاوی علی المراقی ص ۴۴۷ مطبوعہ دار الکتب العلمیہ بیروت)


    واللہ تعالیٰ اعلم


    دارالافتاء،
    دارالعلوم دیوبند