• عبادات >> صلاة (نماز)

    سوال نمبر: 56906

    عنوان: گھر سے مسجد بہت دور ہے كیا نماز گھر میں پڑھی جاسكتی ہے؟

    سوال: مسجد ہمارے گھر سے دو /ڈھائی کلو میٹردور ہے، مسجد جانے اور آنے میں پندرہ سے بیس منٹ لگتے ہیں، اور نماز میں دس سے پندرہ منٹ ،میں بارہویں کلاس میں ہوں، اس لیے میرے والدین میرے وقت کے بارے میں فکرمند ہیں،وہ کہتے ہیں کہ گھر پہ عشاء اور مغرب کی نماز تین بندے (میں، بھائی اور والد صاحب) کے ساتھ پڑھا کرواور وقت بچا ؤ ، کیوں کہ بورڈ کے امتحان کے لیے صرف دو مہینے رہ گئے ہیں، کیا میں ان کی بات پر عمل کروں اور عشا ء اور مغرب کی نمازتین آدمی کی جماعت سے گھر پہ ہی پڑھوں؟

    جواب نمبر: 56906

    بسم الله الرحمن الرحيم

    Fatwa ID: 82-82/Sd=2/1436-U احادیث میں جماعت کے ساتھ نماز پڑھنے کی بہت تاکید آئی ہے اور بلا عذر نماز چھوڑنے والے کے بارے میں سخت وعیدیں وارد ہوئی ہیں، آپ صلی اللہ علیہ وسلم نے ارشاد فرمایا: لوگ جماعت چھوڑنے سے باز آجائیں، ورنہ میں ان کے گھروں کو ضرور جلادوں گا (الترغیب والترہیب: ۱/۱۷) صورت مسئولہ میں جماعت کو ترک کرنے کا جو عذر آپ نے بیان کیا ہے، شرعاً وہ معتبر نہیں، دو ڈھائی کلومیٹر کا فاصلہ آج کل اتنا نہیں ہے کہ جہاں آنے جانے میں بہت زیادہ وقت خرچ ہو، پندرہ بیس منٹ نکال کر مسجد میں جماعت سے نماز پڑھنے میں وقت کو کارآمد بنانا ہے، آپ اپنے والدین کو سمجھائیں اور آپ بھائی، والد وغیرہ مرد حضرات مسجد میں جاکر ہی جماعت سے نماز پڑھنے کا اہتمام کریں، اس سے ان شاء اللہ باقی وقت میں برکت ہوگی اور اللہ کی مدد بھی آپ کے ساتھ رہے گی۔


    واللہ تعالیٰ اعلم


    دارالافتاء،
    دارالعلوم دیوبند