• عبادات >> صلاة (نماز)

    سوال نمبر: 55856

    عنوان: میرے گھر سے آفس کا سفر تیس کلو میٹر ، آفس سے دوسری جگہ پچیس کلو میٹر کا سفر اور واپس لوٹنے کے لیے پچیس کلو میٹر کا سفر ، کل اسی کلو میٹر ہوئے ، اس حالت میں میں نماز قصر کروں یا پوری پڑھوں؟

    سوال: مجھے سفر کے دوران نماز قصر کرنے کے بارے میں معلوم کرنا ہے، میں گھرسے آفس نکلا اور گھرسے آفس تیس کلو میٹر پہ ہے اور گھر سے نکلتے وقت صرف آفس کو جانے کی نیت کرکے نکلا، مگر آفس کو پہنچنے کے بعد کسی آفس کے کام سے پھر مجھے کہیں جانا پڑا۔ آفس سے وہ جگہ پچیس کلو میٹر آفس سے جانا اور پھر دوبار ہ آفس لوٹنے کے لیے پچیس کلو میٹر واپس کا سفرآنا ۔ میرے گھر سے آفس کا سفر تیس کلو میٹر ، آفس سے دوسری جگہ پچیس کلو میٹر کا سفر اور واپس لوٹنے کے لیے پچیس کلو میٹر کا سفر ، کل اسی کلو میٹر ہوئے ، اس حالت میں میں نماز قصر کروں یا پوری پڑھوں؟ اگر اس مسئلہ میں میں گھر سے ہی اس سفر کا ارادہ کروں تو کیا حکم ہے؟ اوراگرمیں آخری جو پچیس کلو میٹر ہے جو آفس کو جانے کا سفر ہے ، میں آفس کو گئے بغیر ہی نیت کر لوں تو کیا حکم ہے؟ مہربانی کرکے بتائیں۔

    جواب نمبر: 55856

    بسم الله الرحمن الرحيم

    Fatwa ID: 2007-1720/B=1/1436-U آفس سے سفر کا ارادہ کیا ہو یا گھر سے، ہردو صورت میں آپ شرعی مسافر نہ ہوں گے اس لیے آپ پوری نماز یعنی چار رکعت پڑھیں، مسافت سفر صرف ایک طرف سے جوڑی جاتی ہے، آمد ورفت دونوں کی مسافت نہیں جوڑی جاتی۔ ایک طرف سے مسافت اگر 77.25km(سوا ستتر) کلومیٹر ہوتی تب آپ مسافر ہوتے۔


    واللہ تعالیٰ اعلم


    دارالافتاء،
    دارالعلوم دیوبند