• عبادات >> صلاة (نماز)

    سوال نمبر: 50521

    عنوان: فجر کی سنتیں اگر اکیلی رہ جائیں اگرچہ اب وہ سنتیں موٴکدہ نہیں رہیں، بلکہ نفل ہوگئیں، مگر چونکہ فجر کی سنتیں آکد السنن ہیں

    سوال: میں یہ جاننا چاہتاہوں کہ اگر فجر کی نماز کا وقت کم بچاہے کہ اتنے وقت میں ہم صرف فرض نماز ہی پڑھ سکتے ہیں تو کیا جو سنت بچ گئی ہے اس کو ہم دن میں ۱۲ بجے تک پڑھ سکتے ہیں یا نہیں؟ ایسا میں نے کسی سے سناہے۔ براہ کرم، رہنمائی فرمائیں۔ شکریہ

    جواب نمبر: 50521

    بسم الله الرحمن الرحيم

    Fatwa ID: 388-329/B=3/1435-U فجر کی سنتیں اگر اکیلی رہ جائیں اگرچہ اب وہ سنتیں موٴکدہ نہیں رہیں، بلکہ نفل ہوگئیں، مگر چونکہ فجر کی سنتیں آکد السنن ہیں، یعنی ان کے بارے میں زیادہ تاکید ہوئی ہے، لہٰذا آپ طلوع آفتاب کے دس پندرہ منٹ کے بعد سے لے کر زوال سے پہلے تک پڑھ سکتے ہیں،چنانچہ حلبی کبیری میں ہے: قال محمد رحمہ اللہ تعالی: أحب إلی أن أقضیہا إذا فاتت وحدہا بعد طلوع الشمس قبل الزوال (الحلبی الکبیری: ۳۴۴، مکتبہ دار الکتاب)


    واللہ تعالیٰ اعلم


    دارالافتاء،
    دارالعلوم دیوبند