• عبادات >> صلاة (نماز)

    سوال نمبر: 42899

    عنوان: قصر نماز

    سوال: میں کراچی میں رہتا ہوں اور آئل گیس سے متعلق کمپنی میں کام کرتا ہوں جو کہ صوبہ سندھ کے ضلع بدین میں آپریٹ کرتی ہے جو کہ کراچی سے ۱۶۰ کلومیٹر دور ہے- میں اس کمپنی ۱۹۹۸ سے کام کر رہا ہوں اس کمپنی بدین کے ایریا میں ۳ کمپس ہیں جہاں تمام ملازمین کو تو ڈیوٹی کے دوران قیام کرنا پڑتا ہے تقریباً ۱۱ سال تک ملازمین ۱۶ دن (۳۶۸ گھنٹے) ڈیوٹی کرتیہیں اور اس کے بعد ۱۴ روز کیلئے گھر جاتے ہیں- ۲۰۰۹ سے ڈیوٹی کا دوران یہ تبدیل ہوکر ۱۵ دن سے کم (۳۵۵ گھنٹے) ہو گیا ہے. ڈیوٹی کے دوران تمام ملازمین کو رہائش کی مکمل سہولت حاصل ہوتی ہے جس میں کھانا وغیرہ سب شامل ہے اسی طرح ہماری ضرورت کی چیزیں ہر ملازم کو دی گئی الماری میں رہتی ہیں جب ملازم ڈیوٹی سے گھر جاتا ہے - ہم ملازمین کو ڈیوٹی کے دوران کیمپ یا آفس میں قیام کے دوران مکمل نماز پڑھنی ہوگی یا قصر نماز ادا کریں گے؟

    جواب نمبر: 42899

    بسم الله الرحمن الرحيم

    فتوی: 2/6/D=2/1434 جو ملازمین کمپنی میں مسلسل سولہ دن قیام کرنے کے ارادہ سے رہتے ہیں (پھر اس کے بعد سے گھر جانے کا ارادہ رہتا ہے) ایسے لوگ کمپنی میں نمازیں پوری پڑھیں گے قصر نہیں کریں گے کیونکہ یہ مقیم ہیں اور جو ملازمین 15 دن سے کم قیام کرنے کا ارادہ رکھتے ہیں وہ قصر کریں گے۔


    واللہ تعالیٰ اعلم


    دارالافتاء،
    دارالعلوم دیوبند