• عبادات >> صلاة (نماز)

    سوال نمبر: 41651

    عنوان: مشینی اذان کا مسئلہ

    سوال: اگر کسی مسجد میں گھڑی کو اس طرح پروگرم کر دیا جائے کہ پانچوں وقت اوٹومٹک اذان ہو اور کوئی شخص اذان نہ کہے اور یہ اذان رکارڈ شدہ اذان ہو جیسے کسی کی آوازرکارڈ کی جاتی ہے اور لوگ اس اذان پر نماز پڑھتے ہوں تو ایسی نماز پڑھنے اور پڑھانے والوں کے لئے کیا حکم ہے؟ قرآن و حدیث کے حوالے سے جواب دیں اور جلدی جواب دیں تاکہ لوگوں کی نماز صحیح طریقے سے ادا ہو۔

    جواب نمبر: 41651

    بسم الله الرحمن الرحيم

    فتوی: 1455-924/L=11/1433 اذان کہنا پنجوقتہ نماوں کے لیے سنت موٴکدہ ہے، اور یہ سنیت اسی وقت ادا ہوگی جب کہ کوئی عقلمند مرد کہے، گھڑی کی اذان اس کے لیے کفایت نہیں کرے گی، لہٰذا جس مسجد میں گھڑی کی اذان پر نماز ہوتی ہے گویا وہ بغیر اذان کے نماز ہوئی اس لیے آئندہ اس طریقہ پر اذان دینے کو بند کردیا جائے۔


    واللہ تعالیٰ اعلم


    دارالافتاء،
    دارالعلوم دیوبند