• عبادات >> صلاة (نماز)

    سوال نمبر: 39059

    عنوان: بد زبان امام كے پیچھے نماز؟

    سوال: میرا سوال یہ ہے کہ امام مسجد اگر منہ چھڑ اور بد زبان، ہوں اور ان کے مقتدی ان کے رویہ سے بد ظن ہوجائے اور کوئی کسی بھی وجہ سے ان کو نہ بھول پاتا ہو اور نہ چاہتے ہوئے بھی ان کہ پیچھے نماز پڑھتا ہو اس وجہ سے کہ قریب وجوار میں کوئی اور مسجد نہ ہو، دین اسلام کے لحاظ سے ایسے امام مسجد کے کیا فرائض بنتے ہیں جن سے مقتدی ناراض ہو؟حدیث اور قران کی روشنی میں جواب عنایت فرمائیں۔

    جواب نمبر: 39059

    بسم الله الرحمن الرحيم

    فتوی: 1126-945/B=6/1433 اگر واقعی کوئی خلافِ شرع کام امام کی ذات میں پایا جاتا ہے اور اس کی وجہ سے اس کے مقتدی ناراض ہوں تو ایسے امام کے پیچھے نماز مکروہ ہوتی ہے، اور قبول نہیں ہوتی ہے، ایسے امام کو چاہیے کہ وہ خودہی مستعفی ہوجائے اور لوگوں کی نماز خراب نہ کرے۔


    واللہ تعالیٰ اعلم


    دارالافتاء،
    دارالعلوم دیوبند