• عبادات >> صلاة (نماز)

    سوال نمبر: 38948

    عنوان: بریلوی کے پیچھے نماز

    سوال: میرا سوال یہ ہے کہ بریلوی امام کے پیچھے نماز ہو جاتی ہے؟اگر سفر کے دوران تکبیر اولی بریلوی مسجد میں مل جائے اور ذرا آگے جا کر دیوبند مسجد میں ایک ہی رکعت مل سکے یا جماعت نہ مل سکے تو کون سی مسجد میں نماز پڑھنا بہتر ہے؟

    جواب نمبر: 38948

    بسم الله الرحمن الرحيم

    فتوی: 983-807/B=6/1433 اگر دیوبندی مسجد میں جماعت ہوچکی ہے تو بریلوی مسجد میں بریلوی امام کے پیچھے نماز پڑھ لے، نماز مکروہ ہوگی لیکن جماعت کی فضیلت حاصل ہوجائے گی، اور اگر دیوبندی مسجد میں ایک رکعت بھی ملنے کی امید ہے تو پھر دیوبندی مسجد میں اہل حق امام کے پیچھے ہی نماز پڑھنی چاہیے،اس صورت میں نماز بھی مکروہ نہ ہوگی اور جماعت کا ثواب بھی مل جائے گا۔


    واللہ تعالیٰ اعلم


    دارالافتاء،
    دارالعلوم دیوبند