• عبادات >> صلاة (نماز)

    سوال نمبر: 35685

    عنوان: دعاء

    سوال: مغرب کی اذان سے قبل کے دعا کی قبولیت کا وقت ہے، حدیث سے کیا ثبوت ملتا ہے؟

    جواب نمبر: 35685

    بسم الله الرحمن الرحيم

    فتوی(م): 1909=1909-1/1433 روزہ دار کے لیے افطار کے وقت دعا کی قبولیت حدیث میں وارد ہے، اسی طرح جمعہ کے دن عصر کے بعد سے غروب شمس کے درمیان ایک ساعت ایسی ہے جس میں دعا قبول ہوتی ہے، التمسوا الساعة التی تُرجی في یوم الجمعة بعد العصر إلی غیبوبة الشمس رواہ الترمذی (مشکاة) اور کتب فقہ میں مذکور ہے کہ اوقاتِ ثلاثہ مکروہہ میں درود شریف، دعا اور تسبیح پڑھنا، یہ تلاوت قرآن سے افضل ہے، الصلاة فیہا علی النبي صلی اللہ علیہ وسلم أفضل من قراء ة القرآن إلخ وفي الشامي أي في الأوقات الثلاثة وکالصلاة الدعاء والتسبیح (شامي زکریا: ۲/۳۵)


    واللہ تعالیٰ اعلم


    دارالافتاء،
    دارالعلوم دیوبند