• عبادات >> صلاة (نماز)

    سوال نمبر: 33677

    عنوان: کبھی کبھار میں صبح کو دیر سے اٹھتاہوں جس کی وجہ سے فجر کی جماعت چھوٹ جاتی ہے، لیکن اس کے بعد میں تنہا نماز پڑھ لیتاہوں اور سنت نہیں پڑھتاہوں، کیا میرا یہ عمل درست ہے؟ہاں تو ٹھیک ہے ، اور اگر یہ عمل درست نہیں ہے تو کس وقت اور کب میں فجرکی سنت پڑھوں؟ براہ کرم، اس پر روشنی ڈالیں۔

    سوال: کبھی کبھار میں صبح کو دیر سے اٹھتاہوں جس کی وجہ سے فجر کی جماعت چھوٹ جاتی ہے، لیکن اس کے بعد میں تنہا نماز پڑھ لیتاہوں اور سنت نہیں پڑھتاہوں، کیا میرا یہ عمل درست ہے؟ہاں تو ٹھیک ہے ، اور اگر یہ عمل درست نہیں ہے تو کس وقت اور کب میں فجرکی سنت پڑھوں؟ براہ کرم، اس پر روشنی ڈالیں۔

    جواب نمبر: 33677

    بسم الله الرحمن الرحيم

    فتوی(م): 1299=1299-8/1432 صبح نماز سے پہلے اٹھنے کا معمول بنائیں، عشاء کے بعدفوراً سونے کی عادت بنائیں تاکہ فجر میں جلد نیند کھل سکے، اگر کبھی اتفاق سے نماز قضا ہوجائے او ر زوال سے پہلے پہلے فجر کی قضا کررہے ہیں تو سنت اور فرض دونوں کی قضا کریں، اور اگر زوال کے بعد قضا کررہے ہیں تو صرف فرض کی قضاء کرلیں۔


    واللہ تعالیٰ اعلم


    دارالافتاء،
    دارالعلوم دیوبند