• عبادات >> صلاة (نماز)

    سوال نمبر: 33011

    عنوان: اگر سنت فرض یا نفل میں ایک سورۃ کے بعد کوئی سورۃ یادنہ ہو تو بیچ کی سورتیں چھوڑ کر تلاوت کرسکتے ہیں؟مثلاً ، سورۃ۔۔۔ اذا زلزلۃالارض۔۔۔۔اور سورۃ۔۔۔تکاثر۔۔۔۔ (۲) قومہ اور جلسہ کی مسنون دعا فرض، سنت ، نفل ، واجب ، سب میں پڑھ سکتے ہیں؟

    سوال: (۱) اگر سنت فرض یا نفل میں ایک سورۃ کے بعد کوئی سورۃ یادنہ ہو تو بیچ کی سورتیں چھوڑ کر تلاوت کرسکتے ہیں؟مثلاً ، سورۃ۔۔۔ اذا زلزلۃالارض۔۔۔۔اور سورۃ۔۔۔تکاثر۔۔۔۔ (۲) قومہ اور جلسہ کی مسنون دعا فرض، سنت ، نفل ، واجب ، سب میں پڑھ سکتے ہیں؟ (۳) اگر بیماری میں رکوع اور سجدے میں جانے سے شدید چکر آئے تو کس طرح نماز پوری کریں؟ میں ایسی صورت میں بیٹ کر پڑھتی ہوں، گھنٹے پر ہاتھ رکھ کرکے آگے جھک کر رکوع اور ہاتھ کے اشارے سے سجدہ ، کیا یہ طریقہ صحیح ہے؟ براہ کرم، رہنمائی فرمائیں۔

    جواب نمبر: 33011

    بسم الله الرحمن الرحيم

    فتوی(د): 1337=841-8/1432 بیچ میں ایک چھوٹی سورۃ چھوڑکر اگلی سورۃ نماز میں پڑھنا مکروہ ہے، مگر ایک سے زائد سورتیں اگر چھوڑدیں تو کسی قسم کی کراہت نہیں ہے۔ (۲) جی ہاں پڑھ سکتے ہیں البتہ امام ہونے کی حالت میں مقتدیوں کا خیال کرکے کہ کوئی بیمار یا ضرورت مند ہوگا ، نہ پڑھنا بہتر ہے۔ (۳) اگر کھڑے ہوکر نماز پڑھنے میں شدید چکر آتا ہے کہ گرپڑنے کا اندیشہ ہے اور کسی دیوار وغیرہ کے سہارے سے کھڑا ہونا بھی دشوار ہے، تو بیٹھ کر نماز پڑھیں اس طور پر رکوع کے لیے تھوڑا جھک جائیں اور سجدہ پورا اس طرح کریں جس طرح کیا جاتا ہے؛ لیکن اگر پورا سجدہ کرنا بھی سر کے چکر کی وجہ سے ناممکن ہو تو پھر سجدہ کا بھی اشارہ کرلیں اس طرح کہ رکوع کے لیے سر تھوڑا جھکائیں اور سجدہ کے لیے زیادہ جھکائیں۔


    واللہ تعالیٰ اعلم


    دارالافتاء،
    دارالعلوم دیوبند