• عبادات >> صلاة (نماز)

    سوال نمبر: 30634

    عنوان: اگر کوئی شخص چند سورتوں کو ہر نماز میں مخصوص کرکے پڑھے تو کیا یہ درست ہے؟جیسے عشاء کی چار فرض نماز میں شروع کی پہلی رکعت میں․․․ قل یا ایھاالکافروں․․․․ اور دوسری رکعت میں․․ اذاجاء ․․․․پھر سنتوں میں․․ تبت یدا․․․․اور قل ہوااللہ․․․․اور اسی طرح تسلسل سے نفلوں تک پڑھتارہے۔ براہ کرم، اس بارے میں رہنمائی فرمائیں۔ 

    سوال: اگر کوئی شخص چند سورتوں کو ہر نماز میں مخصوص کرکے پڑھے تو کیا یہ درست ہے؟جیسے عشاء کی چار فرض نماز میں شروع کی پہلی رکعت میں․․․ قل یا ایھاالکافروں․․․․ اور دوسری رکعت میں․․ اذاجاء ․․․․پھر سنتوں میں․․ تبت یدا․․․․اور قل ہوااللہ․․․․اور اسی طرح تسلسل سے نفلوں تک پڑھتارہے۔ براہ کرم، اس بارے میں رہنمائی فرمائیں۔ 

    جواب نمبر: 30634

    بسم الله الرحمن الرحيم

    فتوی(د):515=312-3/1432

    اگر اس درجہ کی تعیین کرلے کہ کبھی اسکے خلاف نہ کرے یا اس کے خلاف کو غلط سمجھنے لگے ایسی تعیین کرنا مکروہ ہے، اس لیے کبھی کبھی اس کے خلاف بھی پڑھ لیا کرے، قال في الشامیة وھو إنہ إن رأی ذلک حتما یکرہ من حیث تغییر المشروع (شامي: ۱/۴۰۲)


    واللہ تعالیٰ اعلم


    دارالافتاء،
    دارالعلوم دیوبند