• عبادات >> صلاة (نماز)

    سوال نمبر: 23217

    عنوان: میری بیوی پہلے اہل حدیث مسلک پر چلتی تھی ، لیکن مجھ سے شادی کے بعد اس نے اہل سنت و لجماعت (فقہ حنفی) کو اپنا یا ہے۔ لہذا نماز کے بارے میں ایک مسئلہ معلوم کرنا تھا کہ میری بیوی جب قومہ سے پہلے سجدہ کے لیے جاتی ہے تو پہلے زمین پر دونوں پیر دائیں جانب نکال کر بیٹھ جاتی ہے اور پھر پہلاسجدہ کرتی ہے ، پھر اسی طرح بیٹھتی ہے اور دوسرا سجدہ کرتی ہے تو کیا اس کا یہ پہلے سجدہ سے پہلیبیٹھنے کا عمل درست ہے؟ یا خلافت سنت تو نہیں؟


    سوال: میری بیوی پہلے اہل حدیث مسلک پر چلتی تھی ، لیکن مجھ سے شادی کے بعد اس نے اہل سنت و لجماعت (فقہ حنفی) کو اپنا یا ہے۔ لہذا نماز کے بارے میں ایک مسئلہ معلوم کرنا تھا کہ میری بیوی جب قومہ سے پہلے سجدہ کے لیے جاتی ہے تو پہلے زمین پر دونوں پیر دائیں جانب نکال کر بیٹھ جاتی ہے اور پھر پہلاسجدہ کرتی ہے ، پھر اسی طرح بیٹھتی ہے اور دوسرا سجدہ کرتی ہے تو کیا اس کا یہ پہلے سجدہ سے پہلیبیٹھنے کا عمل درست ہے؟ یا خلافت سنت تو نہیں؟

    جواب نمبر: 23217

    بسم الله الرحمن الرحيم

    فتوی(ل):1008=747-7/1431

    نظام الفتاویٰ میں عورت کے سجدہ میں جانے کا مسنون طریقہ یوں مذکور ہے: ”عورت سجدہ میں جاتے ہوئے بائیں کولہے پر ٹیک لگائے اور سہارا لیتے ہوئے دونوں پیر دائیں جانب نکال کر پھر دونوں گھٹنے زمین پر رکھ کر سجدہ میں جاتے ہوئے چمٹ کر سجدہ کرے“ (نظام الفتاویٰ جدید ترتیب جلد پنجم جزء ۱/۱۷۰/۱۷۲) آپ کی بیوی کا سجدہ میں جاتے وقت بیٹھ کر دونوں پیر دائیں جانب نکالنا اور پھر چمٹ کر سجدہ کرنا درست ہے۔


    واللہ تعالیٰ اعلم


    دارالافتاء،
    دارالعلوم دیوبند