• عبادات >> صلاة (نماز)

    سوال نمبر: 19806

    عنوان:

    دعا کرتے وقت اگر کوئی آسمان کی طرف دیکھے تو کیا یہ جائز ہے؟

    سوال:

    دعا کرتے وقت اگر کوئی آسمان کی طرف دیکھے تو کیا یہ جائز ہے؟ (۲)اگر جائز نہیں تو جب ہم دعا کرتے ہیں تو آسمان کا کوئی نہ کوئی کنارہ نظر آتا ہے یا اگر نظر نہ آئے تو دیوار کے اس پار تو ہوتا ہی ہے، یعنی آنکھیں آسمان کے کسی جانب ہوجاتی ہیں،چاہے کھلی فضا ہو یا کمرے کے اندرہوں۔ در اصل بات یہ ہے کہ شاید کسی سے سنا تھا کہ آسمان کی طرف دیکھ کر دعا نہیں کرنی چاہیے حدیث میں ممانعت آئی ہے۔ اب ان مسئلوں میں پڑگیا ہوں اب دعا یا کرتا نہیں اگر کرتا ہوں تو بہت دقت ہوتی ہے اور جلد چھوڑ دیتا ہوں۔ اور دل کہتا ہے کہ اگر دعا کرنا ہے تو بالکل زمین کی طرف کرکے دعا کرو اگر دل کی بات مانوں اور زمین کی طرف منھ کروں تو کہتا ہے کہ وہ دیکھو آسمان کا کنارہ نظر آرہا ہے۔ اور آنکھوں میں بھی درد پیدا ہوگیا ہے۔ آپ میری مدد کیجئے۔

    جواب نمبر: 19806

    بسم الله الرحمن الرحيم

    فتوی(م): 264=264-3/1431

     

    آسمان کی طرف نظر اٹھاکر دعا کرنا خلاف ادب ہے، حدیث میں منع وارد ہے، لیکن اس کے لیے پریشان ہونے کی قطعاً ضرورت نہیں، آپ بس اتنا کرلیں کہ بالقصد دعا کے وقت آسمان کی طرف نظر نہ اٹھائیں، از خود نگاہ پڑجائے تو مضائقہ نہیں اسی طرح اگر دل میں یہ بات آجائے کہ آسمان کا کنارہ نظر آرہا ہے تو بھی دل کی اس بات پر دھیان نہ دیں اور یکسوئی سے دعا پوری کریں۔


    واللہ تعالیٰ اعلم


    دارالافتاء،
    دارالعلوم دیوبند