• عبادات >> صلاة (نماز)

    سوال نمبر: 175387

    عنوان: اپنی دوسری بیوی جو اپنے ماں باپ كے ساتھ 400 كلومیٹر دور رہتی ہے‏، شوہر اس كے پاس جائے گا تو نماز میں قصر كرے گا یا اتمام ؟

    سوال: مفتی صاحب صاحب سوال یہ ہے کہ ایک آدمی ہے جس کی دو شادیاں ہیں پہلی بیوی کے ساتھ ہی اس کے گھر میں رہتی ہے اور دوسری 400 کلومیٹر دور دوسرے شہر میں اپنے یعنی لڑکی کے والدین کے پاس ہی رہتی ہے اور یہ آدمی اس سے ملنے چلے جاتے ہیں ہیں تولہذا جب یہاں سے ملنے جائیں گے تو نماز پوری پڑھیں گے یا قصر کیونکہ ان کی بیوی وہاں رہ رہی ہے اپنے میکے میں یہ ان کا وطن تاہل ہے اور بیوی مستقل ابھی رہ رہی ہے وہیں رہنے کا پروگرام ہے۔

    جواب نمبر: 175387

    بسم الله الرحمن الرحيم

    Fatwa:294-297/SD=6/1441

    صورت مسئولہ میں جب شوہر دوسری بیوی سے ملنے چار سو کلومیٹر دوری پر واقع اس کے گھر جائے گااوراس کی نیت پندرہ دن سے کم ٹھہرنے کی ہوگی ، تو وہ قصر کرے گا۔


    واللہ تعالیٰ اعلم


    دارالافتاء،
    دارالعلوم دیوبند