• عبادات >> صلاة (نماز)

    سوال نمبر: 173754

    عنوان: مرد وعورت كو نماز میں بدن كا كتنا حصہ چھپانا ضروری ہے؟

    سوال: جیسا کہ ہمارے علم میں ہے کہ جس کپڑے سے جسم جھلکتا ہو اس میں نماز نہیں ہوتی کیا اس میں آج کل دستیاب سفید کپڑے شامل ہیں جن سے بنیان بھی نظر آرہی ہوتی ہے اور گرمیوں میں پہنے جاتے ہیں جب کہ کچھ مولویوں نے بھی پہنے ہوتے ہیں۔

    جواب نمبر: 173754

    بسم الله الرحمن الرحيم

    Fatwa : 142-124/M=02/1441

    عورت کو نماز میں دونوں ہتھیلی، دونوں قدم اور چہرہ کو چھوڑ کر تمام بدن کو چھپانا ضروری ہے، اگر عورت اتنا باریک دوپٹہ یا کپڑا پہن کر نماز پڑھتی ہے جس سے بال یا بدن کی رنگت نظر آتی ہے تو ایسے باریک کپڑے میں نماز نہیں ہوتی جب کہ مرد کو صرف ناف سے گھٹنہ تک کا حصہ چھپانا فرض ہے اگر وہ باریک کرتے میں نماز پڑھاتا ہے لیکن ستر کا حصہ بنیان ، لنگی وغیرہ سے چھپا ہوا ہوتا ہے تو نماز ہو جائے گی۔


    واللہ تعالیٰ اعلم


    دارالافتاء،
    دارالعلوم دیوبند