• عبادات >> صلاة (نماز)

    سوال نمبر: 161067

    عنوان: قضا نماز میں کسی نفل نمازکی نیت کرنے کا حکم

    سوال: کیا نفل نماز میں فجر کی قضا کی بھی نیت کر سکتے ہیں کیا؟

    جواب نمبر: 161067

    بسم الله الرحمن الرحيم

    Fatwa:914-770/N=8/1439

    قضا یا اداء کسی بھی فرض نماز میں نفل کی نیت نہیں کی جاسکتی، اگر فرض میں نفل کی نیت کی گئی تو مفتی بہ قول میں صرف فرض نماز ادا ہوگی، نفل کی نیت لغو ہوجائے گی؛ البتہ مسجد میں داخل ہوکر اگر فرض نماز میں شامل ہوا اور اس میں تحیة المسجد کی نیت کرلی تو تحیة المسجد کا ثواب مل جائے گا۔

    ولو فرضا ونفلاً فللفرض (الدر المختار مع رد المحتار، کتاب الصلاة، باب شروط الصلاة، ۲: ۱۲۴، ط: مکتبة زکریا دیوبند)، وإن نوی فرضاً ونفلاً فإن نوی الظھر والتطوع، قال أبو یوسف: تجزیہ عن المکتوبة ویبطل التطوع الخ (الأشباہ والنظائر مع شرح الحموي، ۱: ۱۴۹، ط: دار الکتب العلمیة بیروت)، وحینئذ فإذا نواھا- تحیة المسجد- مع الفریضة یکون قد نوی ما تضمنتہ الفریضة وسقط بھا فلم یکن ناویاً جنساً آخر علی قول محمدبخلاف ما إذا نوی فرض الظھر وسنتہ مثلاً (رد المحتار، کتاب الصلاة، باب الوتر والنوافل، ۲: ۴۵۹، ط: مکتبة زکریا دیوبند)۔


    واللہ تعالیٰ اعلم


    دارالافتاء،
    دارالعلوم دیوبند