• عبادات >> صلاة (نماز)

    سوال نمبر: 145465

    عنوان: ملازم جو چودہ دن نوکری پر اور چودہ دن گھر پر گذارتے ہیں کیا وہ قصر کریں گے؟

    سوال: ہم یہاں بھِٹ گیس فیلڈ(Bhit Gas field,)، پاکستان میں کام کرتے ہیں، جو کہ ایک غیر آباد علاقہ ہے اور ضروریات زندگی کمپنی کے علاوہ موجود نہیں ہے، مسجد بھی عارضی بنائی ہے، مقامی افراد نہیں آسکتے، صرف کمپنی کے ملازم جو چودہ دن نوکری پر اور چودہ دن گھر پر گذارتے ہیں، وہی نماز ادا کرتے ہیں۔ امامت کے فرائض بھی ہم میں سے کوئی نمازی سر انجام دیتا ہے، رہائش ہونے کی وجہ سے کچھ سامان بھی یہاں موجود رہتا ہے اور ایک ہینڈ بیگ گھر ساتھ لیتے یا لے جاتے ہیں، اس صورت میں مندرجہ ذیل سوالات کے جوابات عنایت فرمائیں۔ (۱) ہم جمعہ سے جمعہ (دو ہفتہ) کے لیے آتے ہیں، جمعہ کو آکر دوسرے جمعہ کو واپسی ہوتی ہے تو اس صورت میں نماز قصر ہوگی یا مکمل؟ (۲) کبھی کبھی ایک ہفتہ کے لئے بھی آنا ہوتا ہے تو اس وقت کیا نماز پوری پڑھی جائے گی یا قصر پڑھی جائے گی؟ (۳) جمعہ اور عید کی نماز کے لئے کیا حکم ہے؟

    جواب نمبر: 145465

    بسم الله الرحمن الرحيم

    Fatwa ID: 064-107/L=2/1438

    (۱، ۲) کسی جگہ مقیم ہونے کے لیے کم از کم پندرہ دن قیام کرنا ضروری ہے، اس لیے اگر جائے ملازمت مسافت سفر پر ہو اور پندرہ دن کے قیام کی نیت نہ ہو تو آپ مسافر رہیں گے اور قصر نماز پڑھیں گے۔

    (۳) اگر وہ جگہ شہر یا فناء شہر ،قصبہ بڑا گاوٴں نہیں ہے بلکہ ویران غیرآباد علاقہ ہے تو وہاں رہتے ہوئے جمعہ اور عید کی نماز واجب نہیں آپ لوگ جمعہ کے دن حسب سابق ظہر کی نماز باجماعت ادا کرلیا کریں۔


    واللہ تعالیٰ اعلم


    دارالافتاء،
    دارالعلوم دیوبند