• معاشرت >> اخلاق و آداب

    سوال نمبر: 48598

    عنوان: بیت الخلاء كا رخ

    سوال: میرا ایک سوال یہ ہے کہ ہمارا گھر کرایہ کا ہے اس مکان میں جو بیت الخلاء ہے اس کا رخ قبلہ کی طرف ہے یعنی ہم جب اندر بیٹھتے ہیں تو پشت قبلہ طرف ہوجاتی ہے اور جس گاؤں میں ہم رہتے ہیں اس گاؤں میں سہولت کے ساتھ دوسرا مکان کرایہ کاملنا مشکل ہے اور ابھی اتنا پیسہ پاس میں نہیں ہے کہ جس سے خود کا مکان ہم خرید سکیں تو کیا ایسی حالت میں بیت الخلاء کا استعمال درست ہے؟

    جواب نمبر: 48598

    بسم الله الرحمن الرحيم

    فتوی: 1419-1410/N=12/1434-U پیشاب پاخانہ کے وقت چہرہ یا پیٹھ قبلہ کی طرف کرنا درست نہیں، مکروہ تحریمی ہے کذا في الدر والرد (۱: ۵۵۵، ط مکتبہ زکریا دیوبند) وملتقی الأبحر ومجمع الأنہر والدر المنتقی (۱/۱۰۰، ط دارالکتب العلمیہ، بیروت) لہٰذا صورت مسئولہ میں کرایہ کے رہائشی مکان ہی میں کوئی ایسی صورت نکالیں جس میں پیشاب پاخانہ کے وقت چہرہ یا پیٹھ قبلہ کی طرف نہ ہو، مکان مالک کی اجازت سے اُسی میں کچھ تبدیلی کرلیں یا کوئی اور صورت اختیار کرلیں۔


    واللہ تعالیٰ اعلم


    دارالافتاء،
    دارالعلوم دیوبند