• معاشرت >> اخلاق و آداب

    سوال نمبر: 36394

    عنوان: جب کسی کے یہاں دعوت میں جائیں تو کیا آداب ہونے چاہیے سنّت کے مطابق ؟

    سوال: جب کسی کے یہاں دعوت میں جائیں تو کیا آداب ہونے چاہیے سنّت کے مطابق ؟

    جواب نمبر: 36394

    بسم الله الرحمن الرحيم

    فتوی(ل): 356=210-3/1433 دعوت میں شرکت کرتے وقت مدعو کو مندرجہ ذیل باتوں کا لحاظ رکھنا چاہیے۔ (۱) دعوت میں امیر وغریب کا فرق نہ کرے بلکہ غریبوں کی دعوت میں بھی شرکت کرے۔ (۲) ایسے شخص کی دعوت قبول نہ کرے جس کی کل آمدنی حرام ہے، اگر غالب مال حلال ہے تو پھر تو جائز ہے لیکن اگر زجر کے لیے نہ کھائے تو بہتر ہے۔ (۳) اگر معصیت کے مجمع میں دعوت ہو تو قبول نہ کرے لیکن اگر اس کے جانے کے بعد معصیت کا فعل شروع ہوجائے مثلاً گانا باجا اکثر شادیوں میں ہوتا ہے تو اگر خاص اس جگہ پر ہے جہاں بیٹھا ہوا ہے تو اسے چھوڑکر چلا آئے اور اگر فاصلہ پر ہے تو اگر یہ شخص مقتدائے دین ہے تب بھی اس کو وہاں سے اٹھ آنا چاہیے، اگر مقتدائے دین نہیں ہے تو خیر کھاکر چلا آئے۔ (۴) وقت مقررہ پر جائے تاخیر نہ کرے تاخیر سے انتظار میں زحمت ہوگی۔ (۵) بلااجازت گھر کے اندر نہ جائے کہیں بے پردگی نہ ہوجائے۔ (۶) گھر میں داخل ہوتے وقت اولاً سلام کرے۔ (۷) اپنے ساتھ بغیر دعوت کے کسی شخص یا اپنی اولاد کو ہرگز نہ لے جائے۔ (۸) موٴقر بیٹھا رہے ادھر ادھر نہ دیکھے۔ (۹) جہاں مجلس میں جگہ ملے بیٹھ جائے۔ (۱۰) اس مقام پر نہ بیٹھے جہاں بے پردگی کا احتمال ہو۔ (۱۱) بولنا ہو تو موقعہ محل کی رعایت کرتے ہوئے بولے ورنہ خاموش رہے۔ (۱۲) اگر مجلس میں کوئی بڑا بزرگ ہو تو اس کی رعایت اور ادب کرے۔ (۱۳) وقت سے پہلے آکر کھانا تیار ہونے کے انتظار میں نہ بیٹھ جائے۔ (۱۴) کھانے سے فارغ ہوکر اپنے کاموں میں لگ جائے، دیر تک بیٹھے رہنا اور باتوں میں مشغول ہونا میزبان کے لیے باعث تکلیف ہوسکتا ہے۔


    واللہ تعالیٰ اعلم


    دارالافتاء،
    دارالعلوم دیوبند