• معاشرت >> اخلاق و آداب

    سوال نمبر: 31434

    عنوان: غیبیت وچغلی وغیرہ

    سوال: آفس میں ہم لوگ ایک ٹیبل پر ایک ساتھ دوپہر کا کھانا کھاتے ہیں۔ اس وقت کچھ لوگ ایک دوسرے کے بارے میں کچھ کہتے رہتے ہیں۔ میں ان کی باتوں کو نہ سننے کو کوشش کرتاہوں اور نہ ہی بات چیت میں شریک ہوتاہوں، سوال یہ ہے کہ کیا میں اب بھی مجھ پر چغلخوری کا الزام ہوگا؟براہ کرم، رہنمائی فرمائیں کہ میں کیا کروں؟

    جواب نمبر: 31434

    بسم الله الرحمن الرحيم

    فتوی(ل): 696=251-5/1432 اگر آپ نہ ان کی باتوں میں شریک ہوتے ہیں اور نہ ہی ان کی باتوں کو سنتے ہیں تو آپ پر چغل خوری کا الزام نہ ہوگا۔ البتہ اگر یہ ممکن ہو کہ آپ الگ کھانا کھاسکیں تو الگ کھانے کی ہی کوشش کریں۔


    واللہ تعالیٰ اعلم


    دارالافتاء،
    دارالعلوم دیوبند