• عبادات >> ذبیحہ وقربانی

    سوال نمبر: 48912

    عنوان: قربانی کے ایک ہی بڑے جانور میں ایک آدمی مختلف جہات سے نیت کر کے کچھ حصے لے سکتا ہے کہ ایک حصہ واجب قربانی کی نیت سے اور ایک حصہ میت کے ایصال ثواب کیلئے اور دو حصے عقیقہ کی نیت سے ۔ کیا یہ جائز ہے ؟ اس کے چاروں حصہ میں وہی ہوجائے گا جن کی اس نے نیت کی ہے ؟

    سوال: قربانی کے ایک ہی بڑے جانور میں ایک آدمی مختلف جہات سے نیت کر کے کچھ حصے لے سکتا ہے کہ ایک حصہ واجب قربانی کی نیت سے اور ایک حصہ میت کے ایصال ثواب کیلئے اور دو حصے عقیقہ کی نیت سے ۔ کیا یہ جائز ہے ؟ اس کے چاروں حصہ میں وہی ہوجائے گا جن کی اس نے نیت کی ہے ؟

    جواب نمبر: 48912

    بسم الله الرحمن الرحيم

    Fatwa ID: 1632-1305/B=1/1435-U جی ہاں اس طرح سے حصے لینا درست ہے جب کہ سب حصوں میں قربت یعنی عبادت کی نیت ہو، اور قربانی واجب بھی صحیح ہوجائے گی۔


    واللہ تعالیٰ اعلم


    دارالافتاء،
    دارالعلوم دیوبند