• متفرقات >> دیگر

    سوال نمبر: 67124

    عنوان: کیا کسی کافر یا شیعہ کا دل دکھانا گنا ہ ہے؟

    سوال: (۱) کیا کسی کافر یا شیعہ کا دل دکھانا گنا ہ ہے؟ (۲) اگر کافر یا شیعہ آپ کے سامنے والے گھر میں رہتا ہو تو کیا اس کو سلام کرنا اور پڑوسیوں کے جو حقوق ہیں وہ اس کے ساتھ رکھیں جائیں گے ؟

    جواب نمبر: 67124

    بسم الله الرحمن الرحيم

    Fatwa ID: 1192-1245/L=11/1437 (۱) ناحق کسی کا دل دکھانا گناہ کبیرہ ہے خواہ وہ مسلمان ہو یا کافر۔ (۲) پڑوسی خواہ کافر ہو یا شیعہ اس کے حقوق کی رعایت ضروری ہے، البتہ بلا ضرورت کافر کو سلام نہیں کرسکتے ہاں اگر سلام نہ کرنے کی صورت میں اس کی طرف سے ایذاء رسانی یا اپنے کسی حق کے ضائع کردینے کا اندیشہ ہوتو اسی صورت میں سلام کرنے کی گنجائش ہے، البتہ سلام کرتے وقت السلام علی من اتبع الہدی یا آداب وغیرہ کے الفاظ سے سلام کرنا چاہئے، جو شیعہ اپنے عقائد کفریہ کی وجہ سے دائرہٴ اسلام سے خارج ہیں (جیسا کہ بالعموم شیعوں کا حال ہے) تووہ بھی اس سلسلے میں کافروں کے ساتھ ملحق ہیں۔


    واللہ تعالیٰ اعلم


    دارالافتاء،
    دارالعلوم دیوبند