• متفرقات >> دیگر

    سوال نمبر: 37882

    عنوان: ہمبستری کے شرعی طریقہ کی وضا حت فرمائیں۔

    سوال: ہمبستری کے شرعی طریقہ کی وضا حت فرمائیں۔

    جواب نمبر: 37882

    بسم الله الرحمن الرحيم

    فتوی: 672-361/L=5/1433 مباشرت کا شرعی طریقہ یہ ہے کہ جب شوہر مباشرت کا ارادہ کرے تو مباشرت سے پہلے عورت کو مانوس کرے، اور بوس وکنار ملاعبت وغیرہ جس طرح ہوسکے اسے بھی مباشرت کے لیے تیار کرے اور اس بات کا ہرمباشرت کے وقت خیال رکھے فوراً ہی صحبت شروع نہ کرے، بوقت صحبت قبلہ کی طرف منھ یا پیر نہ کرے اور جتنا ہوسکے پردہ کے ساتھ صحبت کرے کسی کے سامنے حتی کہ بالکل ناسمجھ بچہ کے سامنے بھی صحبت نہ کرے، اور بوقت صحبت بقدر ضرورت ستر کھولے، جب صحبت کا ارادہ کرے تو اولاً بسم اللہ پڑھے اور یہ دعا پڑھے ”اللہم جنبنا الشیطان وجنب الشیطان ما رزقتنا“ دعاوٴں کا ضرور اہتمام کرے ورنہ شیطان صحبت میں شریک ہوجاتا ہے، اور بچہ پر شیطانی اثرات ہوجاتے ہیں، انزال کے وقت دل میں یہ دعا پڑھے ”اللہم لا تجعل للشیطان فیما رزقتنا نصیبا“ صحبت کے بعد یہ دعا پڑھے ”الحمد للہ الذي خلق من الماء بشراً فجعلہ نسبا وصہراً“ اور بوقت صحبت اس بات کا بھی خیال رہے کہ عورت کی بھی شکم سیری ہوجائے، انزال کے بعد فوراً جدا نہ ہوجائے، اسی حالت پر رہے اور عورت کی خواہش پوری ہونے کا انتظار کرے ورنہ عورت کی طبیعت پر اس سے بڑا بار پیدا ہوگا اور بسا اوقات اس کا خیال نہ کرنے سے آپس میں نفرت اور دشمنی پیدا ہوجاتی ہے جو کبھی جدائیگی کا سبب بھی بن جاتی ہے۔


    واللہ تعالیٰ اعلم


    دارالافتاء،
    دارالعلوم دیوبند