• متفرقات >> دیگر

    سوال نمبر: 17483

    عنوان:

    میرا سوال یہ ہے کہ میری بیوی کو کچھ خوف سا محسوس ہوتا ہے ۔اس کو پہلی دفعہ اس وقت اس کا احساس ہوا تھا جب وہ بچہ کی پیدائش کے بعد گھر پر آئی تھی اور ناپاکی کی حالت میں تھی۔ شروع میں اسے کچھ اس طرح لگتا تھا کہ کوئی اس کے کمرے میں ہے، جب وہ سو رہی ہوتی تھی تو ایسا لگتا تھا کہ کوئی کان میں کچھ کہہ رہا ہے (اس وقت ہمارے گھر میں اوربھی لوگ تھے)، اب ہم لوگ علیحدہ رہ رہے ہیں۔تو وہ گھر میں اکیلی ہوتی ہے اپنے دس ماہ کے بچے کے ساتھ ،اب اسے باقاعدہ ایک بہت بڑا کوئی آدمی کی طرح کا کالی چادر اوڑھے ہوئے دکھائی دیتا ہے او راس کے دل میں برے برے خیالات آتے ہیں۔ ....

    سوال:

    میرا سوال یہ ہے کہ میری بیوی کو کچھ خوف سا محسوس ہوتا ہے ۔اس کو پہلی دفعہ اس وقت اس کا احساس ہوا تھا جب وہ بچہ کی پیدائش کے بعد گھر پر آئی تھی اور ناپاکی کی حالت میں تھی۔ شروع میں اسے کچھ اس طرح لگتا تھا کہ کوئی اس کے کمرے میں ہے، جب وہ سو رہی ہوتی تھی تو ایسا لگتا تھا کہ کوئی کان میں کچھ کہہ رہا ہے (اس وقت ہمارے گھر میں اوربھی لوگ تھے)، اب ہم لوگ علیحدہ رہ رہے ہیں۔تو وہ گھر میں اکیلی ہوتی ہے اپنے دس ماہ کے بچے کے ساتھ ،اب اسے باقاعدہ ایک بہت بڑا کوئی آدمی کی طرح کا کالی چادر اوڑھے ہوئے دکھائی دیتا ہے او راس کے دل میں برے برے خیالات آتے ہیں۔ اس کے علاوہ کچھ اس طرح کے اور بھی خیالات آتے ہیں، کیا ایسا ہو سکتا ہے؟ اگر ہاں تو مجھے کیا کرنا چاہیے؟ میرے سسرال والے کہتے ہیں کہ اس کو ایک جاننے والے کوئی بابا ہیں ان کو دکھانا چاہیے ۔ برائے مہربانی مجھے مشورہ دیں کہ میں اس سلسلہ میں کیا کروں؟ اس کے علاوہ میری بیوی اور میرے لیے دعا کر دیں کہ ہم نماز کے پابند ہوجائیں کیوں کہ ہم لوگوں سے نماز کی پابندی نہیں ہورہی ہے خاص کر میری بیوی سے۔

    جواب نمبر: 17483

    بسم الله الرحمن الرحيم

    فتوی(م):1678=1678-11/1430

     

    سب سے پہلا کام تو یہ ہے کہ آپ دونوں (میاں بیوی) نماز کی پوری پابندی کریں اور گھر میں تلاوت کا اہتمام رکھیں، نیز سونے سے پہلے بستر جھاڑکر باوضو ہوکر آیت الکرسی اور چاروں قل پڑھ کر سویا کریں، بیداری کی حالت میں برے خیالات آئیں تو ذہن وقلب کو دوسری جانب متوجہ کرلیا کریں۔


    واللہ تعالیٰ اعلم


    دارالافتاء،
    دارالعلوم دیوبند