• متفرقات >> دیگر

    سوال نمبر: 159842

    عنوان: بینک کی شاخ کا حکم

    سوال: سی پی ایس گراہک سیوا کیندرا (کسٹمر سروس سینٹر) جو بینک کی شاخ ہوتی ہے جو پرائیویٹ کمپنی کے ذریعہ ملتی ہے کام کرنے کے لئے۔ حضرت مفتی صاحب! سی ایس پی کسٹمر سروس پوائنٹ یہ جو پرائیویٹ کمپنی کے ذریعہ ملتا ہے جو کسی بینک کی شاخ ہوتی ہے جیسے ”اسٹیٹ بینک یا بینک آف بروڈا یا کوئی اور بینک“ تو کیا ہم اس کو لے کر کام کرسکتے ہیں اس میں کمیشن ملتا ہے اکاوٴنٹ کھولنے پر بھی اور ٹرانزیکشن کرنے پر بھی، تو کیا ہم اس کام کو کرسکتے ہیں؟

    جواب نمبر: 159842

    بسم الله الرحمن الرحيم

    Fatwa:801-794/H=8/1439

    اگر بینک کی شاخ میں بھی وہی کام انجام دینے ہوں کہ جو بینک میں انجام دیئے جاتے ہیں یعنی اگر شاخ میں بھی سود کا لین دین سودی معاملات کی کتابت اور دستاویز بنانا وغیرہ جیسے امور انجام دئیے جائیں گے اور ان امور کا انجام دینا جائز نہیں پس اس کا قائم کرنا اور آمدنی کا ذریعہ بنانا جائز نہیں ہے۔

    ------------------------

    جواب درست ہے؛ البتہ مزید اضافہ یہ ہے کہ اگر شاخ میں مباح نوعیت کے کام بھی انجام دیے جاتے ہوں تو حکم بدل سکتا ہے، اس لیے بہتر ہے کہ جو جو کام انجام دیئے جاتے ہیں ان کی فہرست لکھ کر دوبارہ سوال کرلیا جائے۔ (س)


    واللہ تعالیٰ اعلم


    دارالافتاء،
    دارالعلوم دیوبند