• معاملات >> دیگر معاملات

    سوال نمبر: 604678

    عنوان:

    نابالغ بچوں کے ہدایا اور تحائف کو والدین کا استعمال کرنا

    سوال:

    ہمارے معاشرے میں نابالغ بچوں کو بہت سے ہدایا اور تحائف مختلف رشتہ داروں اور مکتب و مدرسہ کی طرف سے انعام کی شکل میں دئے جاتے ہیں، کبھی وہ نقدی کی صورت میں ہوتے ہیں، اور کبھی استعمال کی چیزوں کی شکل میں۔ پوچھنا یہ ہے کہ ۱۔ کیا والدین کو ان ہدایا کو اپنی دیگر اولاد پر خرچ کر سکتے ہیں، یا ذاتی استعمال میں لا سکتے ہیں؟ بسا اوقات وہ کسی برتن وغیرہ کی شکل میں ہوتے ہیں، تو کیا گھریلو استعمال کے لئے انہیں نکال سکتے ہیں؟

    ۲۔ بہت سے ہدایا ایسے ہوتے ہیں، جو وقت گذرنے پر خراب ہو سکتے ہیں، جیسے کہ پلاسٹک کی اشیاء اور الیکٹرانک مصنوعات، تو ان کا کیا کیا جائے ؟

    ۳۔ کیا والدین ان تحائف کی قیمت اس بچہ کو ادا کر کے اس کے مالک بن سکتے ہیں؟ بینوا توجروا

    جواب نمبر: 604678

    بسم الله الرحمن الرحيم

    Fatwa : 957-900/D=01/1443

     نابالغ بچوں کو کسی تقریب وغیرہ میں رشتہ داروں یا اہل تعلق کی طرف سے جو ہدیہ یا تحفہ دیا جاتا ہے اس سے کبھی اس خاص بچہ کو دینا مقصود نہیں ہوتا؛ بلکہ ماں باپ کو دینا مقصود ہوتا ہے اس لئے وہ ہدیہ (رقم) بچہ کی ملک نہیں؛ بلکہ ماں باپ اس کے مالک ہیں جوچاہیں جو کریں؛ البتہ اگر کوئی شخص خاص بچہ ہی کو کوئی چیز دیوے تو پھر وہی بچہ اس کا مالک ہے۔ (مستفاد بہشتی زیور: 5/47)۔

    (۱) جو چیز نابالغ کی ملک ہو اس کا حکم یہ ہے کہ اسی بچہ ہی کے کام میں لگانا چاہئے والدین نہ دیگر اولاد پر خرچ کرسکتے ہیں اور نہ ہی خود اپنے استعمال میں لاسکتے ہیں۔ (حوالہ بالا)

    برتن وغیرہ اگر بچہ کے استعمال میں آتے ہوں تو گھریلو استعمال کے لئے نکالنا جائز ہے۔

    (۲) جو ہدایا وقت گذرنے پر خراب ہوسکتے ہیں اور فی الحال بچہ ان کو استعمال نہیں کرسکتا تو اس کو فروخت کرکے قیمت کا بچہ کو مالک بنادیا جائے۔

    (۳) والدین بھی ان تحائف کی قیمت بچہ کو ادا کرکے مالک بن سکتے۔

    قال فی الدر: یبیع الأب لأن لہ ولایة التصرف لا الأم ولا بقیة أقاربہ ولا القاضی اجماعاً عرض ابنہ الکبیر الغائب لا الحاضر إجماعاً لا عقارہ فیبیع عقار صغیر ومجنون۔ (الدر مع الرد: 5/367)

    قال فی الشامی: وحاصلہ أن المنقول مما یخشی ہلاکہ فللأب بیعہ حفظا لہ (5/367)


    واللہ تعالیٰ اعلم


    دارالافتاء،
    دارالعلوم دیوبند