• عبادات >> قسم و نذر

    سوال نمبر: 611107

    عنوان:

    ایك ماہ كے روزے كی نذر مانی تو كیا یہ روزے مسلسل ركھنے ہوں گے ؟

    سوال:

    سوال : اگر کوئی کسی کام کے پیمانے پر ایک ماہ یعنی 30 روزوں کی نذر مانگے اور وہ کام ہو جائے تو کیا یہ روزے مسلسل رکھنے ہوں گے اور کوئی وقفہ نہیں ہوگا اگر کبھی کبھی وقفہ کرے تو جائز ہے کہ نہیں؟

    برا ے مہربانی رہنمائی فرمائیں۔

    جواب نمبر: 611107

    بسم الله الرحمن الرحيم

    Fatwa: 1012-800/M=09/1443

     جی ہاں صورت مسئولہ میں ایك ماہ كے روزے مسلسل ركھنے ہوں گے اگر وقفہ كرے گا تو پھر سے لگاتار ركھنا ہوگا۔ عن الحسن في رجل جعل عليه صوم شهر قال: "إن سمّى شهراً معلوماً فليصمه وليتابع وإذا لم يسمّ شهراً معلوماً، أو لم ينوه فليستقبل الأيام فليصم ثلاثين يوماً، وإن صام على الهلال وأفطر على رؤيته فكانت تسعة وعشرين يوماً أجزأه ذلك، وإن فرق إذاً استقبل الأيام" (المصنف لابن ابي شيبة، الأيمان والنذور رقم: 1263)


    واللہ تعالیٰ اعلم


    دارالافتاء،
    دارالعلوم دیوبند