• معاشرت >> نکاح

    سوال نمبر: 65856

    عنوان: عیسائی یا یہودی عورت سے نکاح؟

    سوال: سوال یہ ہے کہ عیسائی یا یہودی عورت سے نکاح درست ہے یا نہیں؟ قران و حدیث کی روشنی میں رہنمائی فرمائیں۔ اس کی شرعی حیثیت کیا ہے ؟

    جواب نمبر: 65856

    بسم الله الرحمن الرحيم

    Fatwa ID: 961-1045/L=9/1437 اگر کوئی عیسائی یا یہودی عورت اپنے اصل مذہب پر برقرار ہو یعنی حضرت عیسی علیہ السلام (اگر عیسائی عورت ہو) یا حضرت موسی علیہ السلام (اگر یہودی عورت ہو) کو اپنا نبی مانتی ہو اور انجیل یا توریت کو آسمانی کتاب تسلیم کرتی ہو تو اس سے نکاح کرنا جائز ہے؛ لیکن اس دور میں دیگر خطرات مثلاً اولاد کے کافر ہوجانے یا خود شوہر کے بددین ہوجانے کے اندیشہ سے ان سے نکاح سے احتراز ضروری ہے۔ واضح رہے کہ آج کل بالعموم یہود و نصاریٰ دہریہ ہیں ان کا نہ تو کسی نبی پر ایمان ہے اور نہ ہی کسی آسمانی کتاب کے قائل ہیں اور دہریہ عورت سے نکاح جائز نہیں۔


    واللہ تعالیٰ اعلم


    دارالافتاء،
    دارالعلوم دیوبند