• معاشرت >> نکاح

    سوال نمبر: 155730

    عنوان: نکاح کے بعد اُسی دن ولیمہ کرنا

    سوال: حضرت مفتی صاحب! سوال یہ ہے کہ کیا نکاح کے بعد اسی دن ولیمہ کی دعوت جائز ہے یا نہیں؟ کیا اس کے لیے ہمبستری کرنا یا ایک ساتھ سونا شرط ہے؟

    جواب نمبر: 155730

    بسم الله الرحمن الرحيم

    Fatwa : 283-195/D=3/1439

    ولیمہ زوجین کی ملاقات یعنی شب زفاف کے بعد مسنون ہے جب دولہا دولہن ملیں اس روز صبح کو یا دوسرے دن خوشی میں دوست احباب، خویش اقارب، پاس پڑوس کے لوگوں کو جمع کرنا جس میں فقراء و علماء بھی ہوں خلوص نیت کے ساتھ کھانا کھلانا سنت ہے یہی ولیمہ مسنونہ ہے۔

    بعض علماء کے نزدیک نکاح کے وقت دعوت کردینا بھی ولیمہ میں داخل ہے وولیمة العرس سنة وفیہا مثوبة عظیمة وہی إذا بنی الرجل بامراتہ ینبغی أن یدعو الجیران والاقرباء والاصدقاء ویذبح لہم ویصنع لہم طعاماً الخ (عالمگیری: ۶/۲۲۹) ۔ 


    واللہ تعالیٰ اعلم


    دارالافتاء،
    دارالعلوم دیوبند