• عبادات >> جمعہ و عیدین

    سوال نمبر: 605641

    عنوان:

    کیا دایاں پیر رکھ کر منبر پر چڑھنا سنت ہے ؟

    سوال:

    جمعہ کے دن امام صاحب جب خطبہ کے لیے منبر پر تشریف لے جاتے ہیں توکیا دایاں پیر رکھ کر منبر پر چڑھنا سنت ہے ؟اگر ہے تو حدیث کی روشنی سے ثابت فرماکر ممنون فرمائیں۔

    جواب نمبر: 605641

    بسم الله الرحمن الرحيم

    Fatwa:902-683/N=12/1442

    جی ہاں!کسی بھی خطبہ کے لیے جب خطیب منبر پر جائے تو منبر کی پہلی سیڑھی پر دایاں پیر رکھنا سنت ہے؛ کیوں کہ حضرت اقدس نبی کریم صلی اللہ تعالی علیہ وسلم کی سنت مبارکہ یہ ہے کہ آپ صلی اللہ علیہ وسلم ہر مہتم بالشان کام اور جگہ میں دائیں کو بائیں پر مقدم فرماتے تھے۔

    عن عائشة قالت: ”کان النبي صلی اللّٰہ علیہ وسلم یعجبہ التیمن في تنعلہ وترجلہ وطھورہ في شأنہ کلہ (وفي نسخة أخری: وفي شأنہ کلہ)“ (صحیح البخاري، کتاب الوضوء، باب التیمن في الوضوء والغسل، ۱: ۲۹، ط: المکتبة الأشرفیة دیوبند)۔

    اتفق العلماء بأنہ یستحب تقدیم الیمنی في کل ما ھو من باب التکریم کالوضوء والغسل ولبس الثوب والنعل والخف والسراویل ودخول المسجد والسواک والاکتحال وتقلیم الأظفار وقص الشارب ونتف الإبط وحلق الرأس والسلام من الصلاة والخروج من الخلاء والأکل والشرب والمصافحة واستلام الحجر الأسود والأخذ والعطاء وغیر ذلک مما ھو في معناہ ویستحب تقدیم الیسار في ضد ذلک کالامتخاط والاستنجاء ودخول الخلاء والخروج من المسجد ونزع الخف والنعل والسراویل والثوب وأشباہ ذلک (البنایة في شرح الھدایة، کتاب الطھارات، ۱: ۱۵۳، ت: فیض أحمد الملتاني، ط: المکتبة الحقانیة، ملتان، باکستان ونقلہ عنہ في السعایة، ۱: ۱۷۶، ط: باکستان)۔


    واللہ تعالیٰ اعلم


    دارالافتاء،
    دارالعلوم دیوبند