• متفرقات >> اسلامی نام

    سوال نمبر: 43803

    عنوان: میں اپنی بیٹی کا نام ” ماریہ“ رکھ سکتاہوں،؟

    سوال: میں اپنی بیٹی کا نام ” ماریہ“ رکھ سکتاہوں، اس کی صحیح اسپیلنگ کیا ہے؟اسلامی تاریخ میں اس نام کی کیاحیثیت ہے؟ اس نام کے معنی کیا ہے؟

    جواب نمبر: 43803

    بسم الله الرحمن الرحيم

    فتوی: 331-331/M=3/1434 بیٹی کا نام ”ماریہ“ رکھ سکتے ہیں، اسکا صحیح تلفظ ”مَارِیَہ (Mariyah) ہے، اس کے معنی ہیں: سفید اور چکنے بالوں والے بچھڑے کی ماں، نام عمدہ ہے کیوں کہ یہ حضور صلی اللہ علیہ وسلم کی ام ولد (باندی) کا نام ہے جن کے بطن سے حضرت ابراہیم پیدا ہوئے۔


    واللہ تعالیٰ اعلم


    دارالافتاء،
    دارالعلوم دیوبند