• متفرقات >> اسلامی نام

    سوال نمبر: 145900

    عنوان: لڑکے کے نام کے ساتھ محمد لگنا چاہئے یا باپ کا نام یا دونوں؟

    سوال: (۱) لڑکے کے نام کے ساتھ محمد لگنا چاہئے یا باپ کا نام یا دونوں؟ (۲) محمد لڑکے کے نام سے پہلے لگنا چاہئے یا بعد میں؟ (۳) نام کے ساتھ ذات لگا سکتے ہیں؟ مثال کے طور پر رانا یا رائی وغیرہ ۔ ذات لگانے سے غرور کا اثر تو نہیں پیدا ہوتا؟

    جواب نمبر: 145900

    بسم الله الرحمن الرحيم

    Fatwa ID: 144-609/H=6/1438

    (۱) محمد پہلے لگادینا اچھا ہے باپ کا نام لگانا ضروری نہیں تاہم بعد میں لگادیں تو ممنوع بھی نہیں۔

    (۲) پہلے۔

    (۳) اگر صرف تعارف کی حد تک ذہن میں بات رہے تو کچھ مضائقہ نہیں اور تعارف سے بڑھ کر یا بجائے تعارف کے تفاخر دل میں پیدا ہو یا پیدا ہونے کا اندیشہ ہو تو اُس کا ترک ہی بہتر ہے، ذات ونسب پر غرور وگھمنڈ تو وبالِ عظیم ہے اگر اس کی وجہ سے دوسروں کی حقارت ذہنوں میں آنے لگے تو پھر یہ غرور اور گھمنڈ کریلا اور نیم چڑھا کا مصداق بن جاتا ہے، اللہ پاک تمام مسلمانوں کی اس جیسے فتنوں سے حفاظت فرمائے۔ آمین


    واللہ تعالیٰ اعلم


    دارالافتاء،
    دارالعلوم دیوبند