• عقائد و ایمانیات >> اسلامی عقائد

    سوال نمبر: 69746

    عنوان: کیا مروان بن حکم صحابی ہیں یا منافق یا کافر؟

    سوال: کیا مروان بن حکم صحابی ہیں یا منافق یا کافر؟جنہوں نے ام المومنین عائشہ رضی اللہ تعالی عنہا اور حضرت طلحہ رضی اللہ عنہ عشرہ مبشرہ کو قتل کیا تھا۔ براہ کرم، دلیل کے ساتھ جواب دیں۔

    جواب نمبر: 69746

    بسم الله الرحمن الرحيم

    Fatwa ID: 1355-1366/N=1/1438

    مروان بن الحکم تابعی ہیں، انھیں منافق یا کافر کہنا صحیح نہیں،حدیث کی کتابوں میں ان سے مختلف احادیث مروی ہیں، البتہ ان کی صحابیت ثابت نہیں۔ اور حضرت عائشہکا طبعی موت انتقال ہوا(جیسا کہ سیر اور اسمائے رجال کی کتابوں میں ہے )، انہیں کسی نے قتل نہیں کیا۔ اسی طرح حضرت طلحہ بن عبید اللہ کو بھی مروان نے قتل نہیں کیا؛ بلکہ جنگ جمل میں کوئی نا معلوم تیر لگنے سے حضرتکی شہادت ہوئی۔ فلم یر النبي صلی اللہ علیہ وسلم لأن النبي صلی اللہ علیہ وسلم نفاہ - أباہ- إلی الطائف فلم یزل بھا حتی ولي عثمان فردہ إلی المدینة فقدمھا وابنہ معہ الخ (الإکمال في أسماء الرجال مع مشکاة المصابیح، ص ۶۱۷، ط: المکتبة الأشرفیة دیوبند)، مروان بن الحکم بن أبی العاص بن أمیة ……لا تثبت لہ صحبة (تقریب التھذیب، ص ۲۸۹، رقم الترجمة: ۶۵۶۷)، قال خلیفة بن خیاط: قتل فیھا - في وقعة الجمل- طلحة في المعرکة أصابہ سھم غرب فقتلہ (تھذیب التھذیب، ۲: ۲۴۱، ط:موٴسسة الرسالة)۔


    واللہ تعالیٰ اعلم


    دارالافتاء،
    دارالعلوم دیوبند