• عقائد و ایمانیات >> اسلامی عقائد

    سوال نمبر: 68968

    عنوان: انتقال كے بعد روح کہاں جاتی ہے؟

    سوال: میرا سوال یہ ہے کہ فرض کریں کہ آج کسی کا انتقال ہوگیا تو اس کی روح کہاں جائے گی؟قیات کے دن تک اس روح کے ساتھ کیا ہوگا؟(یعنی مرنے کے دن سے لے کر قیامت کے دن تک کے درمیان روح کے ساتھ کیا معاملہ ہوگا)۔ امید ہے کہ آپ میراسوال سمجھ گئے ہوں گے۔ براہ کرم، اس بارے میں رہنمائی فرمائیں۔

    جواب نمبر: 68968

    بسم الله الرحمن الرحيم

    Fatwa ID: 1294-1314/L=11/1437

    انتقال کے بعد روح اپنے مقام پر چلی جاتی ہے اور ارواح کے احوال چونکہ یکساں نہیں بلکہ اعمال و افعال کے اعتبار سے مختلف ہیں اس لیے مقام بھی الگ الگ ہے، نیک لوگوں کی روحیں علین میں اور بدوں کی سجین میں چلی جاتی ہے اور تاقیامت ان کا مستقر یہیں ہوگا؛ البتہ باوجود ارواح کے علین یا سجین میں ہونے کے اپنی قبور و اجساد کے ساتھ ایک نوع کا اتصال و تعلق رہتا ہے اور یہ تعلق خاص اوقات میں زیادہ بھی ہوجاتا ہے، اس دوران سوال و جواب اور بعض کو عذاب قبر ہوتا ہے، اصلاً یہ عذاب روح کو اور ضمناً جسم کو بھی ہوتا ہے اور یہ عذاب خاص اوقات و حالات میں مرتفع بھی ہو جاتا ہے۔


    واللہ تعالیٰ اعلم


    دارالافتاء،
    دارالعلوم دیوبند