• عقائد و ایمانیات >> اسلامی عقائد

    سوال نمبر: 605030

    عنوان:

    ایصال ثواب كرنے پر سب كو پورا پورا ثواب ملتا ہے یا تقسیم ہوكر؟

    سوال:

    صاحب، مجھے ایصالے ثواب کے بارے مے وضاحت کے ساتھ معلومات کرنی ہے .. جیسے اگر کسی نے قران شریف پڑھ کر یا کچھ اور عمل کرکر ثواب کافی سارے لوگوں کو پہنچایا تو کیا سب کو الگ الگ پورے قران شریف پڑھنے کے برابر سواب ملیگا؟ جیسا کی ہمنے سنا ہے کی اگر کوئی اپنے ماں یا باپ کا حججے بدل کرتا ہے تو اسے 9 حجوں کے برابر ثواب ملتا ہے . اگر کسی نے پیارے نبی SLW کا حججے بدل کیا تو کتنے حججوں کا ثواب ملے گا ، کیوں کہ پیارے نبی کا درجہ مان اور باپ سے بھی زیادہ ہے ۔ مفتی صاحب آپ سے غوزارش ہے ۔ خلاصے کے ساتھ بتانے کی مہربانی کریں...اگر دیوبند کا کوئی فتویٰ اس کے متعلق ہو تو بھیجنے کی مہربانی کریں....

    جواب نمبر: 605030

    بسم الله الرحمن الرحيم

    Fatwa : 1123-733/B=11/1442

     اس میں محدثین کے دو قول ملتے ہیں:

    ایک تو یہ ہے کہ جتنے لوگوں کو آپ نے ثواب پہونچایا وہ تقسیم ہوکر ان کو ثواب ملے گا۔

    اور دوسرا قول یہ ہے کہ سب مُردوں کو پورا پورا ثواب ملے گا۔ اللہ کی رحمت کی وسعت کے پیش نظر اسی دوسرے قول کو علماء نے ترجیح دی ہے کہ پورا پورا ثواب ہر ایک کو ملے گا۔

    اگر کوئی شخص اپنے ماں باپ کی طرف سے حج کرتا ہے تو حدیث میں آیا ہے کہ اس بیٹے کو 10 حج کے برابر ثواب ملے گا۔ اور رسول اللہ صلی اللہ علیہ وسلم کی طرف سے حج کرنے والے کو کتنا ثواب ملتا ہے حدیث میں اس کی کوئی صراحت نہیں ملتی ہے۔


    واللہ تعالیٰ اعلم


    دارالافتاء،
    دارالعلوم دیوبند