• عقائد و ایمانیات >> اسلامی عقائد

    سوال نمبر: 601133

    عنوان:

    نبی ﷺ کے نقش نعلین کو دینی کتب میں شائع کرنا کیسا؟

    سوال:

    کیا فرماتے ہیں مفتیان حضرات اس مسئلہ کے بارے میں کہ (۱)حضرت مولانا محمد ادریس کاندھلوی صاحب کی کتاب سیرة المصطفی ﷺ جلد سوم ص ۲۴۷پر آنحضرت ﷺ کے نعلین کا نقش بنا ہوا ہے اور اسی صفحہ پر اس نقش نعلین کے نیچے “خرقہ نبویﷺ”کی ہیڈنگ کے تحت قرآن پاک کی دو آیات(یا ایھالمزمل،یا ایھالمدثر)لکھی ہوئی ہیں اور “اللہ تعالیٰ اور آپ ﷺ”کے الفاظ بھی لکھے ہوئے ہیں ۔تو کیا یہ اللہ تعالی ،رسول اللہ ﷺ اور قرآن کی توہین و گستاخی نہیں ہے ؟کہ نیچے اسی صفحہ پر یہ سب مقدس و پاک تحررات موجود ہیں اور اوپر نبی ﷺ کے نعلین کا نقش بنا کر شائع کیا گیا۔

    (۲)اسی طرح حضرت مولانا قاسم نانوتوی صاحب کے “قصیدہ بہاریہ ”اور حضرت حکیم الامت اشرف علی تھانوی صاحب کی کتاب “زاد السعید”میں بھی نبی ﷺکے نعلین کے نقش شائع کیے گے ہیں تو اس بارے میں بھی بتایا جائے کہ کیا کسی دینی کتاب جس میں اللہ تبارک و تعالی اور رسول اللہ ﷺ کے اسمائے مبارک لکھے ہوں ،قرآن پاک کی آیات اور رسول اللہ ﷺ کی احادیث بھی درج ہوں ،ایسی کتاب کے اندر نبی ﷺ کے نعلین کا نقش شائع کرنا اللہ و رسول ،قرآن و حدیث کی توہین و گستاخی ہو گی کہ نہیں؟

    (۳)اگر یہ توہین و گستاخی کے زمرے میں آتا ہے تو اتنے بڑے بڑے علما کے بارے میں کیا کہا جائے گا کہ ان سب نے گستاخی و توہین کی ؟یا ان کے بارے میں کیا کہا جائے گا؟

    (۴)اگر یہ کہا جائے کہ نبی ﷺ کے نعلین کو مذکوہ صورت میں شائع کرنا گستاخی و توہین نہیں ہے تو اس پر دلائل شرعیہ ارشاد فرما دیں۔

    (۵)آخر اور اہم سوال یہاں یہ بھی ہے کہ اگر ایسی دینی کتب کے اندر (جن میں اللہ و رسول کا نام ہے ،قرآن و احادیث درج ہوں)نبی ﷺ کے نعلین کا نقش شائع کرنا بے ادبی و گستاخی نہیں تو کیا قرآن پاک کے اندر یا کتب احادیث کے اندر نبی ﷺ کے نقش نعلین کو شائع کرنا جائز و درست ہو گا؟ نیز کیا قرآن پاک یا کتب احادیث کے ٹائٹل پیج یعنی فرنٹ صفحہ پر نبی ﷺ کے نعلین کے نقش کو شائع کرنا جائز و درست ہو گا؟ اگر کہاں جائے کہ یہاں قرآن و کتب احادیث کے اندر یا ٹائٹل پیج پر شائع کرنا گستاخی و توہین ہے تو پھردینی کتب کے اندر بھی تو آیات و احادیث ہوتی ہیں وہاں گستاخی و توہین کیوں نہیں ہو گا؟ برائے مہربانی ان اشکالات کے مدلل و علمی جوابات دیجئے ،اورجواب میں اگر کوئی بھی آیت یا حدیث یا عربی عبارات پیش کریں تو ان کے تراجمے بھی ساتھ لکھ دیجئے گا تاکہ ہم جیسے عامی حضرات کو سمجھنے میں آسانی رہے ۔ شکریہ ۔سائل محمد عبد الوہاب

    جواب نمبر: 601133

    بسم الله الرحمن الرحيم

    Fatwa : 353-74T/H=04/1442

     (۱) تا (۵) سیرة المصطفیٰ صلی اللہ تعالی علیہ وسلم کے جو نسخے ہمارے پاس ہیں ان میں نعلین مبارکین کا نقشہ نہیں ہے اسی طرح قصیدہٴ بہاریہ میں بھی نہیں ہے ممکن ہے آپ کے یہاں ناشرین نے اضافہ کردیا ہو۔ ثانیاً آپ نے نعلین کے نقش اور اصل میں فرق نہیں سمجھا اصل کو تو ایسے مواقع میں رکھنا بے ادبی ہے لیکن نقش کا تو یہ حکم نہیں ہے جن اکابر و بزرگوں نے نقش مبارک اپنی کتابوں میں بمناسبت مقام نقل فرمایا ہے انہوں نے عقیدت و محبت میں نقل کیا ہے اور اس میں غلو اختیار کرنے پر تنبیہات فرمادی ہیں۔ تفصیل کے لئے ملاحظہ ہو کفایت المفتی جلد دوم (از ص: ۸۸تا ص: ۹۹مطبوعہ: دارالاشاعت کراچی) معلوم نہیں آپ نے اس کو گستاخی اور توہین کس طرح کشید کرلیا ہے پس نہ کیف مااتفق اس کو شائع کرنے کی اجازت ہے نہ اس میں غلو اور زیادتی جائز ہے۔


    واللہ تعالیٰ اعلم


    دارالافتاء،
    دارالعلوم دیوبند