• عقائد و ایمانیات >> اسلامی عقائد

    سوال نمبر: 59498

    عنوان: اللہ کے بارے میں عقیدہ

    سوال: بکر کہتاہے کہ اللہ جل جلالہ کا کوئی جسم نھیں اور نہ وہ کسی مخلوق کی طرح ھے اور نہ کوئی مخلوق اس کی طرح ھے ، نہ ذات میں اور نہ صفات میں۔اور نہ ھی اس کا کوئی مثل ھے اور نہ ھی کوئی مثال ھے ۔ اس لیے نہ یہ کہہ سکتے ھیں کہ اللہ کسی خاص جگہ میں موجود ھے اور نہ یہ کہہ سکتے ھیں کہ وہ ھر جگہ موجود ھے کیونکہ دونوں صورتوں میں اللہ کا جسم ھونا ثابت ھوتا ھے جو کہ غلط ھے اور یہ ثابت ھو تا ہے کہ اللہ محل حوادث ھے جو کہ غلط ھے کیونکہ ایک خاص جگہ ھو یا تمام جگھیں ھوں سب حادث ھیں ،پہلے نھیں تھے ، بعد میں اللہ نے پیدا کیے ۔ اور کہتاہے کہ اگر کوئی مجھ سے پوچھے کہ اللہ کدھر ھے تو میں اسکو کہوں گا کہ جب کوئی کدھر تھا ھی نھیں، یعنی جب کسی مکان کا وجود نھیں تھا، اللہ نے انھیں پیدا نھیں فرمایا تھا ،اس وقت اللہ جل جلالہ کدھر تھا؟اس وقت اللہ جدھر تھا اب بھی وھیں ھے یعنی کدھر بھی نھیں۔۔کہتاہے ،مخلوقات کو اللہ کی قربت حاصل ھے لیکن یہ قربت نہ بعدی ھے ،نہ جسمانی ھے اور نہ سمتی ھے اور نہ ھی اس فاصلہ کی طرح ھے جیسے ایک جسم کا دوسرے جسم سے کچھ فاصلہ ھو تا ھے یا بالکل ملے ھوئے ھوتے ھیں۔ بلکہ یہ سمجھ سے باھر اور کسی دوسری مخلوق کی قربت کی طرح نھیں۔اللہ کی قربت تین طرح کی ھے ایک وہ جو اللہ کے خاص بندون کو حاصل ھے جو اسکے اطاعت گذار اور برگزیدہ بندے ھیں،دوسری طرح کی قربت عام مومنین کو حاصل ھے اور تیسری قربت عام سب مخلوقات کو۔اور جن کتابوں میں اللہ کا ھر جگہ ھونا لکھا ھے اس کا مطلب صرف یہ ھے کہ اللہ کو ھر چیز کا علم ھے اور ھر چیز اس کے قدرت میں ھے ،چاھے وہ چیز کنتی بڑی ہو یا کنتی چھوٹی اور ھر جگہ اسکا حکم چلتا ھے اور سب کچھ اسکے علم اور قدرت مین ھے ۔ زید کھتا ھے کہ ابن عباس رضی اللہ عنہ کا قول ھے کہ اللہ ھوا کی طرح ھے اور ھوا کی طرح ہر جگہ موجود ھے ۔ زید بکر سے ذیادہ دیندار آدمی ھے اور صوم و صلاة کا پابند ھے بظاہر دینی علم رکھنے والا ھے اور عمر میں بکر سے زیادہ ھے ، تبلیغ میں جاتا رھتا ھے ،اچھا آدمی ھے ۔لیکن اپنی بات کرکے چلاگیا۔اور کوئی سند پیش نھیں کی جس طرح عام لوگ بغیر سند کے حدیث بیان کرتے ھیں۔اب وہ ادھر نھیں ھے اور اس سے رابطہ کرنا مشکل ھے اور ھم سب شش و بنج میں مبتلا ھیں،کہ کس کی بات صحیح ھے اور کیا ابن عباس نے ایسا فرمایا ھے ۔

    جواب نمبر: 59498

    بسم الله الرحمن الرحيم

    Fatwa ID: 550-550/Sd=10/1436-U اللہ تعالیٰ کی صفات متشابہ کے سلسلے میں جو تفصیل سلف اور خلف سے منقول ہے اس کی روشنی میں بکر کا مذکورہ موقف صحیح ہے۔ حضرت ابن عباس رضی اللہ عنہ کی طرف منسوب مذکورہ قول تلاشِ بسیار کے بعد بھی نہیں مل سکا۔


    واللہ تعالیٰ اعلم


    دارالافتاء،
    دارالعلوم دیوبند