• عقائد و ایمانیات >> اسلامی عقائد

    سوال نمبر: 37664

    عنوان: جنت كی نعمتوں كی مثال دنیا میں نہیں

    سوال: قرآن میں ہے کہ جنت میں ایسی نعمتیں ہوں گی کہ کسی دل میں خیال بھی نہ آیا ہوگا کسی آنکھ نے دیکھا نہ ہوگا مگر فضائل صدقات میں ایک رویات میں ہے کہ جنت کی ہر چیز کی مثال دنیا میں موجود ہے سوائے چاندی کی ایک چیز کے جو کہ شیشہ کی طرح دکھے گی تو بظاہر ان دونوں باتوں میں اختلاف لگتا ہے کہ ایک میں بتایا ہے کہ ایسی نعمتیں ہے کہ سوچا بھی نہ ہوگا اور دوسرے میں ہے کہ ہر ایک مثال دنیا میں ملے گی؟

    جواب نمبر: 37664

    بسم الله الرحمن الرحيم

    فتوی: 677-677/M=4/1433 جو بات قرآن وحدیث میں بیان کی گئی ہے، اس سے مراد یہ ہے کہ کوئی قلب انسانی یا چشم انسانی جنت کی نعمتوں کا ادراک دنیا میں حقیقة نہیں کرسکتا؛ یعنی ان کی حقیقت تک پہنچنا محال ہے۔ اور فضائل صدقات کی روایت سے مراد ہے کہ وہ نعمتیں ظاہری شکل وصورت کے اعتبار سے اس عالم فانی میں بھی موجود ہیں۔ جیسا کہ مفتی محمد شفیع صاحب رحمة اللہ علیہ قرآن کریم کی آیت ”وأتوا بہ متشابہا“ کی تفسیر بعض مفسرین سے نقل کرنے میں رقم طراز ہیں (معارف القرآن: ۱/۱۱۱) پس دونوں میں کوئی تعارض نہیں ہے۔


    واللہ تعالیٰ اعلم


    دارالافتاء،
    دارالعلوم دیوبند