• عقائد و ایمانیات >> اسلامی عقائد

    سوال نمبر: 31071

    عنوان: کیا کفریہ شرکیہ اور گندے خیالات آنے سے مسلمان کا نکاح ٹوٹ جاتاہے اور وہ کافر ومشرک تو نہیں ہوجاتاہے؟

    سوال: مجھے بہت سے فحش خیالات آتے ہیں اور کبھی تو نعوذ باللہ ، اللہ سبحانہ و تعالی اور رسول صلی اللہ علیہ وسلم کے بارے میں بھی فحش خیالات آتے ہیں۔ میں کوشش کرتاہوں مگر پھر بھی اس سے بچ نہیں پاتاہوں اور عاجز آجاتاہوں۔ کبھی اللہ سبحانہ وتعالی کا جسم کیسا ہو گا اور کبھی عجیب باتیں؟ تو کیا ایسے کفریہ شرکیہ اور گندے خیالات آنے سے مسلمان کا نکاح ٹوٹ جاتاہے اور وہ کافر ومشرک تو نہیں ہوجاتاہے؟ براہ کرم، رہنمائی فرمائیں ۔ روحانی علاج اورقرآن وحدیث سے دعا ضرور بتائیں۔

    جواب نمبر: 31071

    بسم الله الرحمن الرحيم

    فتوی(ھ): 691=452-4/1432 فحش خیالات تو ان خیالات سے بھی زیادہ برے آجائیں تو ان سے ایمان ونکاح میں کچھ فرق نہیں پڑتا؛ بلکہ خود بخود ایسے خیالات کا آنا دلیل ایمان ہے اور ان شاء اللہ ان خیالات سے ایمان میں پختگی پیدا ہوگی، البتہ خیالات کا لانا بُرا ہے یعنی قصداً خیالات لائے یا آنے پر ان کی طرف متوجہ ہوجائے تو ایسی صورت میں نفس وشیطان کو دخل اندازی کا موقعہ زیادہ مل جاتا ہے اور خیالات کے آنے پر توجہ نہ کریں، بلکہ نماز تلاوت تسبیح یا اپنے دنیاوی کاروباری مشاغل میں انہماک کے ساتھ لگے رہیں یا آنے پر خیالات کے لگ جایا کریں تو آہستہ آہستہ خود بخود ہی ختم ہوجائیں گے۔


    واللہ تعالیٰ اعلم


    دارالافتاء،
    دارالعلوم دیوبند