• عقائد و ایمانیات >> اسلامی عقائد

    سوال نمبر: 30816

    عنوان: ٦ کلموں کی کیا تاریخ ہے ؟ ان کلموں کی شرعی حثیت کیا ہے؟ کیا ان کا یاد ہونا ضروری ہے ؟

    سوال: ٦ کلموں کی کیا تاریخ ہے ؟ ان کلموں کی شرعی حثیت کیا ہے؟ کیا ان کا یاد ہونا ضروری ہے ؟

    جواب نمبر: 30816

    بسم الله الرحمن الرحيم

    فتوی(د):555=52-3/1432

    ۶/ کلموں میں سے بعض تو بعینہ مرتب طور پر احادیث میں وارد ہوئے ہیں، جیسے کلمہٴ اول: لا إلٰہ إلا اللہ محمد رسول اللہ (کنز العمال: ۱/۵۷، مکتبہ التراث الإسلامي) کلمہٴ دوم، سوم وغیرہ اور بعضوں گے الفاظ مختلف موقعوں پر منتشر طور پر وارد ہوئے ہیں۔ ان کو کلمہٴ اول، دوم، سوم کے حساب سے کس نے ترتیب دی؟ کب سے اس کی ابتدا ہوئی؟ اس کی تاریخ معلوم نہ ہوسکی، ممکن ہے کہ کسی نے لوگوں کے یاد کرنے کی آسانی کے لیے، اسلام کی بنیادی ضروری چیزیں خصوصاً عقائد وغیرہ کو یکجا کردیا۔ جہاں تک ان کی شرعی حیثیت کی بات ہے تو ان میں مذکور عقائد کو تو دل سے ماننا ضروری ہے، اس کے بغیر کوئی شخص مسلمان نہیں ہوسکتا؛ البتہ ایمان کے لیے ان کو یاد کرنا یا زبان سے کہنا ضروری نہیں، ہاں ایمان کو تازہ رکھنے کے لیے ان کو پڑھتے رہنا لازم ہے، نیز ان کو پڑھنا ذکر میں داخل ہے اور ذکر کا ثواب قرآن وحدیث میں منصوص ہے؛ بلکہ ان میں سے بعض کلمات کی فضیلت اور تعلیم خود احادیث میں وارد ہے۔


    واللہ تعالیٰ اعلم


    دارالافتاء،
    دارالعلوم دیوبند